مزید خبریں

معاشی چیلنجز سے نمٹنے کے لیے مشترکہ لائحہ عمل اپنانا ہوگا، وفاقی وزیر

اسلام آباد (کامرس ڈیسک) وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی، ترقی ،اصلاحات وخصوصی اقدامات احسن اقبال نے کہا ہے کہ پاکستان کو کئی چیلنجز درپیش ہیں،نمٹنے کے لیے مشترکہ لائحہ عمل اپنانا ہوگا،چاہتے ہیں آنے والی نسلوں کو پرامن،خوشحال اور ترقی یافتہ پاکستان دے کر جائیں۔ ٹرن اراؤنڈ کانفرنس کا مقصد ایسے آئیڈیاز سامنے لانا ہے جس سے پاکستان کو ترقی کی راہ پر گامزن کیا جاسکے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو ٹرن اراؤنڈ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔وفاقی وزیر نے کہا کہ ان سب کو دل کی گہرائیوں سے خوش آمدید کہتا ہوں جو ملک کے مختلف حصوں اور دنیا بھر سے کانفرنس میں شرکت کے آئے ہیں ،وہ ملک کو ٹرن ارائونڈ بھی کریں گے اور اسے ترقی کے راستے پر ڈالیں گے۔انہوں نے کہاکہ مارشل لا کے بعد ترقی کے وژن کو ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا گیا،وژن 2025 کا مقصد ملک کو دنیا کی 25 بڑی معیشتوں میں شامل کرنا تھا،2018میں حکومت کی تبدیلی کے ساتھ وڑن بھی تبدیل ہوگیا،2018 میں ترقیاتی بجٹ 1000کے قریب تھا، اتنا ہی بجٹ دفاع کی ترقی کا تھا مگر افسوس سے کہنا چاہتاہوں کہ ساڑھے تین سال کے بعد ہمارا ترقیاتی بجٹ 550 ارب روپے پہ آگیا اور آخری کوارٹر میں ریلیز زیرو کر دی گئی۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم صاحب آپ نے ملک اور معیشت کو بچانے کا راستہ چنا،ملک کی ترقی کے لیے جو راستہ چنا ہے اس کے تحت ملک کو دوبارہ ترقی کے راستے پر ڈالنا ہے ،روس یوکرین بحران کی وجہ سے قیمتوں میں بے پناہ اضافہ ہوا،دوسرا ماضی کی حکومت کی جانب سے بروقت فیصلے نہ کرنے کی وجہ سے ہم پیچھے چلے گئے۔انہوں نے کہا کہ 75سال میں ملک کو اس جگہ نہیں لے جاسکے جہاں جانا چاہیے تھا،پالیسیوں میں تسلسل نہ ہونے کی وجہ سے ترقی کے اہداف حاصل نہ کرسکے،ہماری ذمہ داری ہے کہ آنے والی نسل کو اچھا مستقبل دیں کر جائیں ،ترقی کے لئے اصلاحات کرنا ہوں گی ،صنتعوں کو فروغ کے لئے ویلیو ایڈیشن پر توجہ دینی ہوگی،ایسی مصنوعات تیار کرنا ہوں گی کہ میڈ ان پاکستان کو فروغ ملے۔