مزید خبریں

جامشورو،سینڈوز روڈ کا ادھورا کام چھوڑ کر ٹھیکیدار فرار

جامشورو(نمائندہ جسارت)موجودہ حکومت کی دن دگنی مہنگائی سے ترقیاتی کام رکنا شروع ہوگئے۔سینڈوز روڈ کا اَدھورا کام چھوڑ کر ٹھیکیدار مشینری لے کربھاگ گیا۔محکمہ صحت کے ذِمے روڈ کے کراسنگ نالے بنانے میں عدم دلچسپی ۔ٹھیکیدار کی جانب سے علاقہ مکینوں کے گھروں کے سامنے چھوڑے گئے ملبے سے سخت تکالیف کا سامنا،متعلقہ اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔ تفصیلات کے مطابق جامشورو سہون کا قدیمی روڈ جو انتظامیہ کی نااہلی اور کرپشن کی وجہ سے عرصہ دراز سے بند ہوگیا تھا ۔ جس کی وجہ سے جامشورو شہر اور اُس سے ملحقہ دیگر شہروں سے آمد رفت میںسخت تکالیف کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا۔اِس سلسلے میں سماجی تنظیموں او رشہریوں کی جانب سے بارہا بڑے پیمانے پر احتجاج کرتے ہوئے DCآفس کے سامنے دھرنے دیے جاتے رہے ہیں ۔ جس پر بلدیاتی الیکشن کے قریب آتے ہی عوام کو لولی پاپ دیتے ہوئے روڈ کا کام شروع کرادیا گیا تھا ۔لیکن روڈٹھیکیدار کی جانب سے زیرِ تعمیر سینڈوز روڈ میں ناقص میٹر یل استعمال کرتے ہوئے بے ہنگم طریقے سے کہیں کہیں سے روڈ کی تعمیر شروع کی تھی ۔لیکن موجودہ حکومت کی دِن دگنی مہنگائی ڈیزل اور پیٹرول قیمتوں میں مسلسل اِضافے کے باعث سے ترقیاتی کام رُکنا شروع ہوگئے۔اسی طرح سینڈوز روڈ کا بھی اَدھورا کام چھوڑ کر ٹھیکید ار مشینری لے کر بھا گ گیا،جبکہ اِس سلسلے میں ٹھیکیدار کے ساتھ چلنے والے ٹرک ڈرائیورز نے بھی ڈیزل پیٹرول مہنگا ہونے کے سبب کرایو ں میں اِضافے کا مطالبے پر نااِتفاقی کے سبب میٹریل لانا بند کردیاتھا۔ اِس دوران محکمہ صحت کے ذِمے روڈ کے کراسنگ نالوں اور روڈ کے ساتھ دیگر نالوں کے بنانے میں عدم دلچسپی کے سبب کام سُست روی کا شکار ہوگیا ، دوسری طرف تعمیر کے سلسلے میں روڈ کو چوڑا کرنے کی غرض سے ملبہ لوگوں کے گھروں کے سامنے ڈال دیا گیا ہے ،جس سے علاقہ مکینوں کو چھوڑے گئے ملبے سے سخت تکالیف اور اَذیت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔علاقہ مکینوں نے متعلقہ اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے اور روڈ کی جلد تکمیل کا مطالبہ کیا ہے۔