مزید خبریں

سودی نظام مسلط کرنے والوں کیخلاف عدالت جائینگے،مولانا عبدالحق

کوئٹہ(نمائندہ جسارت)امیر جماعت اسلامی بلوچستان مولانا عبدالحق ہاشمی نے کہا کہ ظلم وجبر لاقانونیت بدعنوانی کے خلاف جماعت اسلامی کی جدوجہد جاری رہیگی سودی نظام مسلط کرنے والوں کے خلاف جماعت اسلامی سپریم کورٹ گئی ہے اب رکاوٹ اسٹیٹ بینک نے ڈالا ہے اے پی ڈی ایم سودی نظام کے خاتمے کیلیے جماعت اسلامی کے پٹیشن کا ساتھ دیں ۔بدقسمتی سے بدعنوانی ،مہنگائی ،بھاری سودی قرضے اوردیگر برائیوں میں اے پی ڈی ایم اورپی ٹی آئی سب ملے ہوئے اورمتحد ہیں ۔جماعت اسلامی سودختم کرنے کی جدوجہد کر رہی ہے ان شاء اللہ سرخروہوگی ۔سودجاری رکھنے کے حوالے سے حکمران دینی جماعتوں اور ان کے سربراہان کی خاموشی لمحہ فکر ہے۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے جماعت اسلامی کے صوبائی سیکرٹریٹ کوئٹہ میں دینی مدارس کی ملک گیر منظم تنظیم جمعیت طلبا عربیہ بلوچستان کے وفد سے ملاقات کے دوران گفتگومیں کیا وفد میں جمعیت طلبا بلوچستان کے منتظم مولانا داداللہ ناصر ،مولانابخت اللہ کاکڑ،صدام حسین کاکڑبھی شامل تھے۔ اس موقع پرجمعیت طلبا عربیہ کے منتظم مولاناداداللہ ناصرنے تنظیم کی جاری سرگرمیوں ،رپورٹ وآئندہ لائحہ عمل کے حوالے سے مولاناعبدالحق ہاشمی کو آگاہ کیا۔ مولاناعبدالحق ہاشمی نے کہاکہ جماعت اسلامی کے مدارس الحمداللہ نہ صرف دینی وعصری تعلیم فراہم کر رہی ہے بلکہ تعصبات فرقہ واریت ولسانیت سے بھی پاک ہوتی ہے جمعیت طلبا عربیہ نے مدارس کے طلبا وعلمائے کے درمیان بہترین رابطے پیدا کرکے ہرطرف یکسوئی اتحادویکجہتی کی فضا بنادی۔بدقسمی سے ملک پر اسلام وپاکستان بیزارآئی ایم ایف کے نوکر اور امریکی آلہ کارقوتیں مسلط ہیں جس کی وجہ سے آج ملک میں سودی معیشت چل رہی ہے بدترین لوٹ مار اور احتساب نہ ہونے کی وجہ سے ملک کا دارومدارآئی ایم ایف ودیگر کے بھاری سودی قرضوں پر ہیں ہمارے بزدل نااہل ناکام حکمران بھاری سودی قرضے ملنے پر شادیانے بجاتے ہوئے نہیں شرماتے قوم کو بھاری سودی قرضوں کے دلد ل میں فوجی آمروں کیساتھ اے پی ڈی ایم اور پی ٹی آئی کی حکومتیں برابر کے شریک ہیں ۔ ہم ہر ظلم کے خلاف ہر پلیٹ فارم پر جدوجہد کر رہے ہیں ظلم کے نظام کو سپورٹ کرناظالم کا ساتھ دینے کے مترادف ہے ۔ بلوچستان کو بھی گزشتہ کئی دہائیوں سے مسلط ٹولے نے تباہ کیا ہے جس کی وجہ سے ہر طرف غربت بے روزگاری پریشانی ومسائل ہیں۔ ان کے ذمے داربدعنوان عناصر ہے بلدیاتی انتخابات میں نیک نام ،خدمت کے جذبے سے سرشارافراد کو منتخب کیا جائے تاکہ مسائل کے حل کی راہ متعین ہوجائے۔جن پارٹیوں کے ممبران صوبائی وقومی اسمبلی اور سینیٹرزنے باربار اقتدارمیں آکر عوام کے مسائل حل نہیں کیے ان کو دوبارہ آزمانا دانشمندی نہیں۔بلوچستان بالخصوص صوبائی دارالحکومت میں بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ نے عوام کی زندگی اجیرن بنادی ۔حکمران بلوچستان کے عوام کیساتھ ناانصافی بند کریں۔