مزید خبریں

بجٹ اجلاس میں تاجروں پرمزید ٹیکس لگانا زیادتی ہے‘ اختر خان

کراچی( پ ر)پاکستان جیم جیولری ٹریڈرز اینڈ ایکسپورٹرزایسوسی ایشن کے چیئرمین اختر خان ٹیسوری نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ بجٹ اجلاس میں جیولری کے بڑے دکانداروں پر تین فیصد اور چھوٹے دکانداروں پر جو چالیس ہزار روپے کا ٹیکس لگایا گیا ہے یہ سراسر زیادتی ہے۔ان کا کہنا ہے کہ سونے پر تو ٹیکس ہوناہی نہیں چاہیے اس کے بجائے لیبر پر یا پھر اسٹون پر ٹیکس لگانا چاہیے اور دنیا بھر میں بھی ٹیکس کا یہی طریقہ رائج ہے۔ اگر حکومت نے یہ ٹیکس واپس نہ لیا تو کاروبار کرنا بہت مشکل بلکہ ناممکن ہوجائے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ اسی طرح حکومت نے کیش سیل کی جو 25 ہزار روپے کی حد مقرر کی ہے وہ بہت ہی کم ہے، اس کی وجہ یہ ہے کہ دیہاتوں میں تو لوگوں کے پاس نہ تو بینک اکائونٹ ہوتے ہیں اور نہ ہی اے ٹی ایم کارڈ لہٰذا وہ تو نقد رقم سے ہی ساری خریداری کرتے ہیں تو ہمارا مطالبہ ہے کہ اس حد (کیش سیل) کو دس لاکھ روپے تک بڑھایا جائے تاکہ دور دراز کے لوگوں کو پریشانی نہ ہو۔انہوں نے کہا کہ اسی طرح ہم نے برآمدات بڑھانے کے لیے پچھلی حکومتوں کو مختلف تجاویز دیں اور انہیںبتایا کہ آپ ایس آر او 760 کو تبدیل کردیں، اس کی وجہ سے جیولری کی برآمدات میں 98 فیصد تک کمی آئی ہے ،آٹھ سو ملین ڈالر کی ایکسپورٹ 25 ملین ڈالرز تک نیچے آگئی ہے۔