مزید خبریں

ہماری اصل منزل خود انحصاری، ملک کو مستحکم بنانے کے راستے پر گامزن ہیں ، وزیر اعظم

اسلام آباد( نمائندہ جسارت) وزیراعظم شہباز شریف کا کہنا ہے کہملک کو مستحکم بنانے کے راستے پر گامزن ہیں۔ اسلام آباد میں ٹرن اراؤنڈ پاکستان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ مفتاح اسماعیل نے صبح میسج بھیجا کہ آئی ایم ایف سے 1 نہیں 2 ارب ڈالر مل جائیں گے، مفتاح اسماعیل کو جواب میں کہا کہ ہماری منزل خود مختاری ہے۔ وزیراعظم نے کہاکہ ہماری اتحادی حکومت ہے، فیصلوں پر مشاورت جمہوری عمل ہے، بنگلادیش میں 6 ارب ڈالر سے بہت بڑا انفرااسٹرکچربنایا گیا، پاکستان میں بھی کسی چیزکی کمی نہیں، ہرشعبے کے ایکسپرٹ ہیں،14 ماہ میں معاشی استحکام لائیں گے لیکن یہ سیاسی استحکام سے جڑا ہے۔ شہباز شریف کا کہنا تھا کہ افغانستان سے کوئلہ جلد آناشروع ہوجائے گا، ریکوڈک میں اربوں ڈالرکاخزانہ دفن ہے لیکن ہم نے ایک دھیلا نہیں کمایا، پاکستان قرضوں کے بوجھ تلے دب چکا ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ہمارامقصد زراعت کی ترقی اور برآمدات بڑھاناہے، بہت بڑے چیلنجز ہیں،ہم سب مل کر ملک کوبحران سے نکالیں گے،سپر ٹیکس سے جمع ہونے والا پیسہ ضائع یا برباد نہیں ہوگا۔علاوہ ازیں وزیراعظم نے چیئرمین نیب کی تعیناتی کے لئے ناموں کا نیا پینل مانگ لیا ہے ۔ وزیراعظم نے اپنے سیکرٹری توقیر شاہ کو اس عہدے کے لیے غیر جانبدار افراد کے نام دینے کی ہدایت کی ہے ۔ وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر راجا ریاض کے درمیان چیئرمین نیب کے معاملے پر ملاقات ہوئی ہے، اپوزیشن لیڈر کی جانب سے نیب کے لیے کوئی نام نہیں دیا گیا ،نئے نام آنے کے بعد وزیراعظم اتحادیوں سے مشاورت کریں گے جس کے بعد اپوزیشن لیڈر سے مشاورت کی جائے گی ، حکومت نے فی الحال ڈپٹی چیئرمین نیب ظاہر شاہ کو بطور قائم مقام چیئرمین کام جاری رکھنے کی ہدایت کی ہے ،ذرائع نے بتایا کہ بلوچستان عوامی پارٹی نے وزیراعظم کو خط لکھ کر چیئرمین نیب کے لیے جسٹس (ر) احمد لاشاری اور جسٹس (ر) غلام اعظم قمبرانی کے نام تجویز کر دیے ہیں۔