مزید خبریں

بحرین میں اسرائیل اور عرب ممالک کا اجلاس

منامہ (انٹرنیشنل ڈیسک) خلیجی ریاست بحرین میں نقب فورم کی اسٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس شروع ہوگیا،جس میں اسرائیل اور امریکا کے علاوہ عرب ممالک شریک ہیں۔ خبررساں اداروں کے مطابق اسرائیلی وزارت خارجہ کے ڈائریکٹر جنرل ایلون اوشبیس اور مشرق وسطیٰ کے لیے ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل عودید یوسف رات کے وقت منامہ پہنچے ۔ اجلاس میں امریکا، مراکش، مصر، متحدہ عرب امارات اور بحرین کے نمائندوں نے شرکت کی۔ اجلاس کے دوران شرکا نے توقع ظاہر کی مستقبل میں اس طرح کے اجلاسوں میں سعودی عرب بھی شامل ہوگا۔ اسرائیلی ذرائع ابلاغ کے مطابق سربراہ اجلاس کا مقصد تعاون کے منصوبوں کو ایک فریم ورک میں پیش کرنا ہے۔ اجلاس میں خوراک ، پانی، سیاحت اور زراعت کے شعبوں میں 6 گروہ بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ سربراہ اجلاس میں فلسطینیوں کی شرکت کے بارے میں یوسف نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ کوئی ایسا فورم نہیں ہے جو فلسطینیوں کے مسئلے پر بات کرے گا۔ اس فورم پر اقتصادی مسائل پر بحث کی جائے گی۔ دوسری جانب امریکی اخبار وال سٹریٹ جرنل نے انکشاف کیا ہے کہ مارچ میں مصر کے سیاحتی مقام شرم الشیخ میں اسرائیل اور عرب ممالک کے فوجی رہنماؤں کے درمیان خفیہ ملاقات ہوئی تھی۔اس ملاقات میں ایران کے ڈرون پروگرام سے متعلق بڑھتی ہوئی کشیدگی، میزائل صلاحیتوں کے خلاف ہم آہنگی اور مشترکہ دفاع کے طریقوں پرتبادلہ خیال کیا گیا۔ یہ پہلا موقع تھا کہ اتنی اعلیٰ سطح پر عرب اور اسرائیلی افسران نے امریکی فوجی سر پرستی میں تبادلہ خیال کیا ۔