مزید خبریں

بجلی کی قیمت میں 7 روپے 90 پیسے اضافہ،ایل پی جی بھی 10روپے مہنگی

اسلام آباد(صباح نیوز+آن لائن) حکومت نے ایک بار پھر صارفین پر بجلی بم گرادیا، نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا)نے بجلی 7 روپے 90 پیسے فی یونٹ اضافے کی منظوری دے دی۔ اضافہ مئی کی ماہانہ فیول ایڈجسٹمنٹ کی مد میں کیا گیا ہے،فیصلے سے صارفین پر 113ارب روپے سے زائد کا بوجھ پڑے گا۔ڈسکوز کے مئی کے ماہانہ فیول چارجز ایڈجسٹمنٹ کے حوالے سے نیپرا ہیڈ کوارٹر میں چئیرمین نیپرا انجینئر توصیف ایچ فاروقی کی زیر صدارت عوامی سماعت ہوئی۔سی پی پی اے نے موقف اختیار کیا کہ مئی میں فرنس آئل سے 8.80 فیصد بجلی پیدا کی گئی، فرنس آئل سے بجلی 33 روپے67 پیسے فی یونٹ میں پیدا ہوئی، مقامی گیس سے 10 اور درآمدی ایل این جی سے 22.89 فیصد بجلی پیدا کی گئی، مئی میں پانی سے 24.50 فیصد بجلی پیدا کی گئی ہے۔سماعت کے دوران سی پی پی اے حکام نے بتایا کہ عالمی سطح پر فیول کی قیمتیں بہت زیادہ بڑھ گئی ہیں، جولائی کے آخر کے لئے 42 ڈالر کی قیمت پر ایل این جی کارگوز مل رہے ہیں، موجودہ ملکی حالات میں انھیں خریدنا ناممکن ہے۔ چیئرمین نیپرا نے کہا کہ ہمیں بجلی نہ بنانے پر لوڈشیڈنگ اور بجلی بنانے پر مہنگی والی صورتحال ہے،اللہ کا واسطہ ہے کہ اب درآمدی فیول پر پلانٹس نہ لگائیں۔نیپرا علامیہ کے مطابق مئی کا ایف سی اے اپریل کی نسبت 3 روپے 91 پیسے فی یونٹ جولائی میں زیادہ چارج کیا جائے گا، اس کا اطلاق کے الیکٹرک صارفین پر بھی نہیں ہو گا، اتھارٹی ڈیٹا کی مزید جانچ پڑتال کے بعد اپنا تفصیلی فیصلہ جاری کرے گی۔ادھر کراچی سمیت ملک بھر کے چھوٹے بڑے شہروں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ میں اضافہ ہو گیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ شہروں اور دیہات میں دورانیہ 6 سے 8 گھنٹے سے تجاوز کر گیا ہے۔ بجلی کی طلب 28000 میگاواٹ سے تجاوز کر گئی جبکہ پیداوار 22500 میگاواٹ کے لگ بھگ ہے۔شہرقائدکراچی میں شدید گرمی کے دوران 14 گھنٹے تک کی لوڈشیڈنگ سے شہری پریشان ہوگئے ہیں۔شہر قائد کے مختلف علاقوں جن میں کھارادر، لیاری، نیاآباد، کورنگی، اورنگی، لانڈھی، سرجانی ٹا?ن، قائدآباد، قیوم آباد اور کیماڑی میں طویل لوڈشیڈنگ ہورہی ہے۔اس کے علاوہ نیو کراچی، نارتھ ناظم آباد، ناظم آباد، لیاقت آباد، گلشن اقبال، گلستان جوہر اور اسکیم 33 میں بھی طویل لوڈشیڈنگ کا سلسلہ نہ رک سکا۔شہریوں نے شکوہ کیا کہ رات بھر صرف 2 گھنٹوں کے لیے بجلی دی جارہی ہے، ہر 2 سے 3 گھنٹوں بعد 3 گھنٹوں کی لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے۔وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ دنیا بھر میں تیل و گیس کی قیمتوں میں نمایاں اضافہ ہوا ‘جولائی میں لوڈشیڈنگ مزید بڑھے گی۔اتحادی جماعتوں کے ارکان قومی اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ عوام مہنگائی کا سامنا کر رہے ہیں، صاحب ثروت افراد سے 200 ارب روپے سے زائد جمع ہونے کی توقع ہے، پاکستان دیوالیہ ہونے سے بچ گیا ہے، بہت جلد آئی ایم ایف سے معاہدہ ہونے والا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہمیں جولائی کے لیے گیس کے جہاز نہیں ملے مگر ہم کوشش کر رہے ہیں۔ان کایہ بھی کہنا تھا کہ دنیا میں کوئلہ بہت مہنگا ہو چکا ہے، پاکستان کے اربوں ڈالر کوئلے کی درآمد پر خرچ ہوتے ہیں، افغانستان سے ان شااللہ کوئلہ آنا شروع ہو گا، افغانستان سے کوئلے کی درآمد سے 2 ارب ڈالر کے قریب بچیں گے، افغانستان سے کوئلہ ڈالر میں نہیں روپے میں خریدیں گے۔شہباز شریف نے مزید کہا کہ چیلنجز آئیں گے لیکن ہم آگے بڑھتے رہیں گے اور مسائل حل ہوں گے، دوست ممالک سے تکنیکی مدد، سرمایہ کاری اور تجارت کریں گے، کشکول کا زمانہ ختم ہوگا، نیا زمانہ آئے گا، اتحادی حکومت ضرور تبدیلی لے کر آئے گی۔دوسری جانب ترجمان کے الیکٹرک نے بتایا کہ شہر میں کہیں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ نہیں کی جارہی، عدم ادائیگی اور بجلی چوری والے علاقوں میں شیڈول کے مطابق لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے۔دوسری جانب ایل پی جی مافیا نے مارکیٹ میں مصنوعی قلت پیدا کرکے قیمت میں 10روپے فی کلو اضافہ کر دیا۔وفاقی حکومت کی جانب سے فی ٹن ایل پی جی پر سپر ٹیکس عاید ہونے کو جواز بناکر مافیا نے ایل پی جی کی ذخیرہ اندوزی شروع کر دی ہے۔مافیا نے عیدالاضحی کے موقع کا فائدہ اٹھانے کے لیے ایل پی جی کی مصنوعی قلت پیدا کرکے فی کلوگرام ایل پی جی کی قیمت 10 روپے بڑھا دی ہے جبکہ اس کے برعکس عالمی مارکیٹ میں ایل پی جی کی قیمتیں کم ہو رہی ہیں۔ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین عرفان کھوکھر نے وزیراعظم شہباز شریف سے ایل پی جی مافیا کے خلاف فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس مافیا نے خودساختہ طور پر ایل پی جی کی قیمت میں 10روپے فی کلو اضافہ کرکے فی کلو قیمت 210روپے تک پہنچا دی ہے۔چیئرمین عرفان کھوکھرکے مطابق گھریلوں سلنڈر کی قیمت 120 روپے کے اضافے سے 2475روپے اور کمرشل سلنڈر کی قیمت 455روپے کے اضافے سے 9532روپے ہوگئی ہے جبکہ گلگت بلتستان میں فی کلو ایل پی جی کی قیمت 260 روپے تک پہنچ گئی ہے۔