مزید خبریں

افسوس ہم اب تک پولیو کو ختم نہیں کرسکے، شہباز شریف

اسلام آباد ( نمائندہ جسارت،خبر ایجنسیاں)وزیراعظم محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان کو پولیو سے پاک اور اس مرض کو ہمیشہ کیلیے شکست دینی ہے، پیر سے شروع ہونے والی پولیو مہم کو مل کر کامیاب بنانا ہے۔ پیر کو اپنے ٹویٹ میں شہباز شریف نے کہا کہ پولیو ایک جان لیوا وائرس ہے جو نہ صرف زندگی بلکہ بچوں کے مستقبل کیلیے بھی خطرہ ہے، یہ بات قابل افسوس ہے کہ ہم ابھی تک مکمل طور پر پولیو کا خاتمہ نہیں کر سکے۔ انہوں نے کہا کہ پیر سے شروع ہونے والی پولیو مہم کا ہدف 25 انتہائی پسماندہ اضلاع ہیں، آئیں مل کر اس کو کامیاب بنائیں اور پولیو کو ہمیشہ کیلیے شکست دیں۔علاوہ ازیںوزیر اعظم شہباز شریف نے بین الاقوامی منڈی میں کوئلے کی بڑھتی ہوئی قیمت پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ملک کا قیمتی زرمبادلہ بچانے کے لیے افغانستان سے اعلیٰ کوالٹی کا کوئلہ ڈالرز کی بجائے روپوں میں درآمد کرنے کی منظوری دی ہے ،وزیر اعظم ہائوس سے جاری تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم شہباز شریف نے ملک میں افغانستان سے درآمد شدہ کوئلے کی نقل و حمل کا نظام بہتر بنانے کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کی۔وزیر اعظم نے بین الاقوامی منڈی میں کوئلے کی بڑھتی ہوئی قیمت پر گہری تشویش کا اظہار کیا، اور اسے ملک میں کوئلے سے چلنے والے پاور پلانٹس سے مہنگی بجلی پیدا کرنے کا بنیادی سبب قرار دیا۔وزیر اعظم نے ملک کا قیمتی زرمبادلہ بچانے کے لیے افغانستان سے اعلیٰ کوالٹی (Super Critical) کا کوئلہ ڈالرز کی بجائے روپوں میں درآمد کرنے کی منظوری دی۔ اس سے نہ صرف سستی بجلی پیدا کرنے بلکہ ملک کا قیمتی زرمبادلہ بچانے میں مدد ملے گی۔وزیر اعظم کو بتایا گیا کہ ابتدائی طور پر صرف ساہیوال اور حب پاور پلانٹس کے لیے درکار کوئلے کی افغانستان سے درآمد پر امپورٹ بل میں سالانہ 2.2 ارب ڈالر سے زیادہ کی بچت ہو گی۔وزیر اعظم نے تمام متعلقہ اداروں کوہدایت کی کہ وہ اس مقصد کے لیے موثر نظام وضع کریں، تاکہ ملک میں سستی بجلی پیدا کر کے گھریلو صارفین اور صنعتوں کو ریلیف پہنچایا جاسکے۔وزیر اعظم نے وزارت ریلوے کو بھی ہدایت کی کہ وہ افغانستان سے درآمد شدہ کوئلے کی پاور پلانٹس تک جلد از جلد ترسیل کو یقینی بنانے کے لیے تمام ضروری اقدامات اٹھائیں۔قبل ازیں وزیراعظم شہباز شریف نے اسلام آباد میں 10 سال سے زیر تعمیر جیل آئندہ مالی سال میں مکمل کرنے کا حکم دے دیا، منصوبے کے جائزے کیلیے 6 رکنی کمیٹی تشکیل دیکر ایک ہفتے میں رپورٹ طلب کر لی۔ جاری نوٹیفیکیشن کے مطابق وزیراعظم نے اسلام آباد ماڈل جیل کمپلیکس کا سالوں سے زیر التوا منصوبہ ہنگامی بنیادوں پر مکمل کرنے کی ہدایت کی ہے جبکہ اس سلسلے میں 6 رکنی کمیٹی تشکیل دیکر ایک ہفتے میں کمیٹی سے رپورٹ طلب کی گئی ہے ، وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ خان کو کمیٹی کا سربراہ مقرر کیا گیا ہے، ، سیکرٹری ٹو وزیراعظم ڈاکٹر توقیر شاہ کے دستخطوں سے حکمنامہ جاری کیا گیا ، کمیٹی کے ارکان میں داخلہ، ہاؤسنگ، منصوبہ بندی کی وزارتوں کے سیکرٹری، چیف کمشنر اسلام آباد اورچیئرمین سی ڈی اے شامل ہیں ۔