مزید خبریں

ایم کیو ایم کی پی پی سے معاہدہ ختم کرنے کی دھمکی ، جے یو آئی کا سندھ حکومت کیخلاف تحریک کا اعلان

 

کراچی (اسٹاف رپورٹر+ مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ قومی موومنٹ اور پیپلزپارٹی کے اتحاد میں دراڑ پڑنے لگی ، وزیر اعظم کی یقین دہانی بھی کام نہ آئی اور ایم کیو ایم نے معاہدے سے دستبردار ہونے کی دھمکی دے دی۔دوسری جانب وفاق میں حکومتی اتحاد میں شامل اہم جماعت جمعیت علمائے اسلام نے بھی سندھ حکومت کے خلاف تحریک چلانے کا اعلان کردیا ہے۔تفصیلات کے مطابق ایم کیوایم پاکستان کے ڈپٹی کنوینراور سابق میئرکراچی وسیم اختر نے پیرکو پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاہے کہ سندھ میں بلدیاتی انتخابات اور اس کے نتائج پر شدید تحفظات ہیں، انہوں نے نے الزام عاید کیا ہے کہ جن حلقوں میں ایم کیو ایم کے امیدوار جیت رہے تھے وہاں نتائج روکے گئے۔وسیم اختر نے کہا کہ اب حد ہوگئی، معاہدے کی وجہ سے خاموش ہیں، اگر پیپلزپارٹی معاہدے سے منحرف ہوتی ہے توایم کیو ایم بھی بہادر آباد کو تالا لگا کر سڑکوں پرہوگی۔ انہوں نے کہا کہ معاہدے میں طے ہوا تھا کہ پیپلزپارٹی ہمارا اور ہم ان کا مینڈیٹ قبول کریں گے، سکھر، میرپور خاص میں سیٹیں ایم کیو ایم کو ملنی چاہئیں، اگر حلقہ بندیوں اور انتخابی فہرستوں پر ایم کیو ایم کے خدشات کو نہ سنا گیا تو کراچی اور حیدرآباد میں بلدیاتی انتخاب نہیں ہونے دیں گے۔ ایم کیو ایم پاکستان کے رہنما نے کہا کہ ایسا نہ ہو کہ حالات وہاں چلے جائیں جہاں سنبھالے نہ جاسکیں، کراچی، حیدرآباد میں جبری مینڈیٹ مسلط کیا تو ذمے دار الیکشن کمیشن ہوگا۔وزیراعظم شہبازشریف ان معاملات کوسنجیدہ لیں،بلدیاتی الیکشن میں یہ حال ہے توعام انتخابات میں کیا ہوگا۔دوسری جانب وفاق میں حکومتی اتحاد میں شامل اہم جماعت جمعیت علمائے اسلام نے بھی سندھ میںبلدیاتی انتخابات کے نتائج کو مسترد کرتے ہوئے حکومت کے خلاف تحریک چلانے کا اعلان کردیا۔ لاڑکانہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے جے یو آئی سندھ کے سیکرٹری جنرل راشد محمود سومرو نے سندھ کے 14 اضلاع میں ہونے والے بلدیاتی انتخاب میں پیپلز پارٹی پر دھاندلی کا الزام لگادیا۔ راشد محمود سومرو کا کہنا تھا کہ بلدیاتی انتخاب میں دھاندلی نتائج مسترد کرتے ہیں،کارکنان پر تشدد اور دہشت گردی کے مقدمات کے بعد وفاق میں اتحاد پر غور کریں گے۔ رہنما جے یو آئی کا کہنا تھا کہ بلدیاتی انتخاب میں ہمارے کارکنوں پر گولیاں چلائی گئیں اور ہمارے ہی کارکنوں کے خلاف ایف آئی آر کاٹی گئی۔ راشد محمود سومرو نے پارٹی قیادت سے بھی زرداری بھگاؤ، سندھ بچاؤ تحریک شروع کرنے کا مطالبہ کردیا۔