مزید خبریں

Jamaat e islami

وفاقی کابینہ ،عمران خان اور محمود خان کے بیانات کا نوٹس ،کارروائی کا فیصلہ،تحقیقاتی کمیٹی قائم

اسلام آباد(نمائندہ جسارت+اے پی پی) وفاقی کابینہ نے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کے اسلحہ لانے کے اعتراف اور وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان کے دھمکی آمیز بیانات کانوٹس لیتے ہوئے کارروائی کا فیصلہ کرلیا۔وزیراعظم شہباز شریف کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں کابینہ نے عمران خان کے کارکنان کے اسلحہ ساتھ لانے کے بیان کا نوٹس لے لیا۔ذرائع کے مطابق کابینہ کے اجلاس میں رانا ثنااللہ کی سربراہی میں 5 رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی جس میں قمر زمان کائرہ، ایاز صادق، اسعد محمود،اور وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ شامل ہیں جب کہ کمیٹی عمران خان اور محمودخان کے بیانات کا جائزہ لے کر آئندہ کے لائحہ عمل سے آگاہ کرے گی۔ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ نے وزیراعلیٰ کے پی محمود خان کے بیان پر شدید تشویش کا اظہار کیا۔کابینہ کی بریفنگ کے د وران کہا گیا کہ میڈیا کی مسلح جتھوں اوراِن کے اصل چہرے کے حقائق پرمبنی رپورٹنگ قابلِ ستائش ہے۔وزیر اعظم نے کابینہ کو بتایا کہ انہوں نے وزارت داخلہ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو ہدایت کی تھی کہ کسی بھی اہلکار کے پاس اسلحہ نہیں ہونا چاہے۔ اسی پر وزیر داخلہ رانا ثنااللہ نے بتایا کہ کسی بھی اہل کار کے پاس اسلحہ نہیں تھا۔ وفاقی کابینہ نے قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کوفرائض بخوبی انجام دینے پرخراج تحسین بھی پیش کیا گیا۔واضح رہے کہ وزیراعلیٰ محمود خان نے ایک بیان میں کہا تھاکہ اس بارپوری قوت کے ساتھ ریاست اور وفاقی دارالحکومت پرحملہ کریں گے جب کہ ایک انٹرویو میں عمران خان نے اعتراف کیا کہ ہماری طرف بھی لوگوں نے پستول رکھے ہوئے تھے۔