مزید خبریں

مالدیپ کے پارلیمانی انتخابات آج ہورہے ہیں

مالے (صباح نیوز) چین یا بھارت مالدیپ کے پارلیمانی انتخابات میں فیصلہ ہوگا، مالدیپ کے 2 لاکھ 84 ہزار رائے دہندگان اگلے 5 سال کے لیے 93اراکین پارلیمنٹ کا انتخاب کریں گے۔ صدر محمد معزو نے بھارت سے منہ موڑ کر چین سے دوستی بڑھانے کو ترجیح دی ہے ‘ان کی پارٹی پیپلز نیشنل کانگریس (پی این سی) بھی میدان میں ہے‘ یہ انتخابات صدر محمد معزو کے لیے بڑی آزمائش کا درجہ رکھتے ہیں۔ محمد معزو نے چین سے مالدیپ نے وسیع البنیاد پارٹنرشپ کا معاہدہ کیا ہے اور چین نے مالدیپ میں بنیادی ڈھانچے کی اپ گریڈیشن کے لیے قرضے بھی دیے ہیں۔ صدر محمد معزو نے ملک کو بھارت کے اثرات سے آزاد کرنے کے لیے انقلابی نوعیت کے اقدامات کیے ہیں۔ انہوں نے حال ہی میں مالدیپ کی سرزمین پر تعینات بھارتی فوجیوں کو نکل جانے کا حکم دیا ہے۔ یہ عمل مئی میں مکمل کرلیا جائے گا۔یاد رہے کہ 2 ماہ قبل مالدیپ کی ایک وزیر اور پارلیمنٹ کے ارکان کی طرف سے بھارت کے وزیر اعظم نریندر مودی کے بارے میں سوشل میڈیا پر اہانت آمیز ریمارکس اپ لوڈ کیے جانے پر دو طرفہ تعلقات میں غیر معمولی کشیدگی در آئی تھی۔ محمد معزو نے بھارت مخالف جذبات ابھار کر اہل وطن کی نظر میں اپنے لیے نمایاں احترام پیدا کیا ہے۔ مالدیپ کے باشندوں کی اکثریت چاہتی ہے کہ ملک کے بیشتر اور باالخصوص دفاعی معاملات میں بھارت کا اثر و رسوخ ختم کیا جائے۔ لوگ اب بھارت سے مایوس ہوکر چین کی طرف دیکھ رہے ہیں۔