مزید خبریں

پاکستان اتحاد کا 29اپریل کو پنجاب اسمبلی کے سامنے دھرنے کا اعلان

بورے والا(صباح نیوز)پاکستان کسان اتحاد کے مرکزی جنرل سیکرٹری چودھری افتخار احمد نے کہا ہے کہ ملک بھر کے کسانوں نے حکومت کی گندم خریداری اور بار دانہ تقسیم کی پالیسی کو مسترد کردیا ہے جسکے خلاف ملک بھر کے کسان 29اپریل کو لاہور میں پنجاب اسمبلی کے سامنے احتجاجی دھرنا دینگے اگر حکومت نے ہمارے امن احتجاج کو روکا تو کسان ہر ضلع میں احتجاجی دھرنے دیکر اضلاع کو بلاک کردیں گے حکومت نے گزشتہ سال اشرافیہ اور مخصوص مافیا کو نوازنے کے لیے 82لاکھ ٹن گندم غیر ضروری طور پر باہر سے منگوائی جو کھانے کے بھی قابل نہیں اب اسی گندم سے گودام بھرے پڑے ہیں ملک کا کسان لاکھوں ٹن گندم باردانہ نہ ملنے کی وجہ سے سرمایہ داروں اور مافیاز کو 3ہزار روپے تک فروخت کرنے پر مجبور ہے گندم کی قلت کے دوران حکومت نے کسانوں سے
3900 روپے میں گندم خریدی جوکہ بعد میں عوام کو 6ہزار روپے من خریدنا پڑی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی صدر کیپٹن(ر)محمد خاں ٹی جے اور تحصیل صدر اجمل اعجاز چٹھہ نے کہا کہ حکومت کی گندم خریداری پالیسی اور باردانہ کی تقسیم میں مڈل مین اور اشرافیہ کو نواز کر لاکھوں کسانوں کا معاشی قتل کررہی ہے پنجاب حکومت کی آن لائن باردانہ تقسیم کی خریداری پالیسی مکمل ناکام ہوچکی ہے حکومتی پالیسی کے خلاف ملک بھر کی کسان تنظیمیں بلاتفریق کسانوں کے حقوق کے لیے 29اپریل کے احتجاج میں شریک ہوں لاہور کا احتجاجی دھرنا مطالبات کی منظوری تک جاری رہے گاگا اس موقع پرچوہدری عمران وڑائچ،خرم حسن سنگھیڑا،آفتاب خاں ساہوکا، چوہدری سعید احمد، عبداللہ جٹ عثمان خاں جوئیہ اور چوہدری محمد ساجد بھی موجود تھے۔