مزید خبریں

مہنگی بجلی:فیصل آباد میں50 ہزار لومزانڈسٹری بند

 

فیصل آباد(صباح نیوز) کونسل آف لومزا ونرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین وحیدخالق رامے نے انکشاف کیاہے کہ بجلی کی قیمتوں میں اضافہ کی وجہ سے فیصل آباد میں کل 3 لاکھ لومزانڈسٹری میں سے 2 لاکھ جبکہ اُن میں سے بھی ڈیڑھ سال میں50 ہزار بندیاسکریپ میں فروخت ہوچکی ہیں جس کی وجہ 50ہزارمزدوراوراس سے متعلقہ دیگرسٹاف بے روزگار اورمالکان دیوالیہ ہوچکے ہیں۔مہنگی بجلی نے انڈسٹری کونگل لیاہے۔بجلی کی قیمت کم نہیں ہوگی توانڈسٹری بھی نہیں چلے گی جرائم کی شرح میں بھی اضافہ ہوگا۔ ہوگا۔2022سے2023تک بجلی کی قیمت 22روپے یونٹ تھی جوایک سال 2ماہ بعد 22روپے سے بڑھ کر56سے 58روپے یونٹ ریٹ ہوچکاہے۔مہنگی بجلی کی وجہ سے پیداواری لاگت ممکن نہیں۔گفتگوکرتے ہوئے اُن کاکہناتھاکہ معیشت آئی ایم ایف کے
چنگل میں پھنس چکی ہے اس کی ڈکٹیشن پربجلی اورپیٹرول کی قیمتوں میں مرحلہ واراضافہ طے کرلیاجاتاہے آئندہ بجٹ میں بھی بجلی گیس اورپیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کاخدشہ ہے ایسے حالات میں انڈسٹری کاچلناایک سوالیہ نشان ہے۔بجٹ انڈسٹری اور عوام دوست ہوناچاہیے انڈسٹری سیکٹرکو مزاکرات میں شامل کرنے کی بھی ضرورت ہے۔ اُنہوں نے کہاکہ جب تک چھوٹی انڈسٹری کے لیے بجلی اوربڑی انڈسٹری کے لیے سوئی گیس کی قیمت میں کمی جبکہ بلاوجہ ٹیکسزاورنوٹسز ختم کیے بغیرانڈسٹری کی بحالی اورمعاشی استحکام ممکن نہیں۔ انڈسٹری کواپنے پائوں پرکھڑاکرنے کے لیے حکومت کوہمارے ساتھ تعاون کرناچاہیے۔اُنہوں نے حکومت کو تجویزدی ہے کہ ایکسپورٹ پرتوجہ دی جائے اس میں اضافہ ہوگاتوانڈسٹری بھی چلے گی اورسرمایہ کاری بھی ہوگی۔