مزید خبریں

Jamaat e islami

اندرون سندھ، سندھی ثقافت جوش و خروش سے منائی گئی

سکھر/ کھپرو/ شکارپور/ میرپورخاص/ لاڑکانہ/ ٹنڈو محمد خان/ قمبر علی خان/ میہڑ/ حب (نمائندگان جسارت + جسارت نیوز) اندرون سندھ میں سندھی ثقافت کا دن جوش و خوش سے منایا گیا۔ سکھر میں نوجوانوں، بچے، بچیوں اور طلبہ طالبات سمیت زندگی کے مختلف شعبہ سے تعلق رکھنے والے افراد نے یوم ثقافت کے موقع پر سندھی ٹوپی اور اجرک پہن کر سندھ دھرتی اور سندھی ثقافت کے ساتھ اپنی والہانہ وابستگی اور محبت کا اظہار کیا۔ پریس کلب روڈ پر تمام دن نوجوانوں کا ہجوم رہا جنہوں نے سندھی ثقافت کو اُجاگر کرنے کے لیے مختلف پروگرامات کیے، شہر بھر میں لوگوں کی بڑی تعداد ٹولیوں میں جمع تھی اور شہری کی تفریح گاہوں پر رش رہا، اس موقع پر سیکورٹی کے خصوصی انتظامات کیے گئے تھے۔ گلوبل چوک اور مینارہ روڈ سمیت مختلف علاقوں میں نوجوانوں نے سندھی ترانوں اور ڈھولک کی تھاپ پر رقص کر کے اپنی مسرت و خو شی کا اظہار کیا۔ کھپرو میں رہنے والے اپنے اپنے انداز میں سندھی ٹوپی اجرک کو اُجاگر کر رہے تھے جس میں بچے بوڑھے نوجوان سندھی ٹوپی اجرک زیب تن کیے اور سندھی گانوں پر رقص کرتے دکھائی دیے۔ دوسری جانب جسقم کارکنان کی جانب سے پر وقار ریلی کا انعقاد کیا گیا، ریلی کی قیادت آزاد کمبھر شوکت بردی، رئیس اکبر مری نے کی، ریلی میں جھنڈے پلے کارڈ اُٹھا رکھے تھے جو سندھی اجرک ٹوپی پہن کر سندھی سے اظہارِ یکجحتی کی اور سندھ کی ثقافت کو اُجاگر کیا۔ آزاد کمبھر شوکت بردی نے بتایا سندھ دھرتی 5 ہزار سال پرانی ہے، یہاں ہر سال اسی طرح سندھی ثقافت ڈے مناتے ہیں اور وڈیرے اور جاگیرداروں کا پیغام دیا کہ ہم سندھ دھرتی کے رکھوالے ہیں، انشاء اللہ ہم یہاں کے ہر چیز کے لیے آگے رہیں گے، سندھ ہمارا ہے، سندھ کی ثقافت کو اُجاگر کرتے رہیں گے۔ شکار پور کے گورنمنٹ اسلامیہ ہائی اسکول، شاہ لطیف ہائی اسکول، پرائمری ٹیوشن سینٹر سمیت دیگر سرکاری اور پرائیوٹ اسکولوں کالج اور ٹیوشن سینٹرز اور تعلیمی اداروں میں سندھی کلچر ڈے کے حوالے سے پروگراموں کا انعقاد کیاگیا، پروگراموں میں ٹیبلوز اور سندھی گیتوں پر سندھی ثقافت کو اُجاگر کیا گیا، مختلف مقامات سے ثقافتی دن کی مناسبت سے ریلیوں کا انعقاد کیا گیا جن میں مختلف تنظیموں اور فنکاروں کی جانب سے ریلیاں نکل کر جمانی ہال چوک پہنچے جہاں لگائے گئے مختلف سندھی میڈیا کی جانب سے کیمپ میں شامل ہوکر جلوس کی شکل اختیار کر گئے۔ میرپورخاص پریس کلب کے سامنے مرکزی کیمپ پر لوگوں کا سمندر اُمڈ آیا، سندھ کے نامور فنکاروں خوشبو لغاری، بھگت بھورا لال بھٹ شاہی اور دیگر نے قومی و ثقافتی ملی نغمے پیش کیے جس میں نوجوانوں کی جانب سے رقص کیا گیا، قائم مرکزی کیمپ میں کمشنر، ڈپٹی کمشنر و دیگر افسران اور سیاسی و سماجی نمائندے میں پہنچے جہاں انہیں پریس کلب کے صدر نے اجرک کے تحائف پیش کیے، مختلف علاقوں سے لوگ ریلیوں کی شکل میں پریس کلب کے سامنے قائم مرکزی کیمپ پہنچے جہاں وہ سندھی گیتوں جھومتے رہے۔ اس موقع پر مقررین نے اپنے خطاب میں کہا کہ سندھ کا ثقافتی دن ہمارے قومی تہوار ہے، یہاں ہزاروں افراد کو ثقافتی ملبوسات میں دیکھ کر خوشی ہوئی، سندھ کی ثقافت 5 ہزار سال پرانی ہے، یہ دھرتی صوفیا کرام کی دھرتی ہے۔ دیگر نے اپنے خطاب میں کہا کہ سندھ صوفیوں اور اولیاء کی سرزمین ہے یہاں کے لوگ اپنی ثقافت، رسوم و رواج اور روایات پر فخر کرتے ہیں جس کی مناسبت سے ہر سال سندھ کا ثقافتی دن مناتے ہیں۔ ایس ٹی پی، جئے سندھ قومی محاذ، سندھ یونائٹڈ پارٹی اور دیگر قوم پرست جماعتوں اور شہریوں کی جانب سے مختلف علاقوں سے ریلیاں نکال کر مرکزی کیمپ پر پہنچنے جہاں مہمانوں کا استقبال کیا گیا اور انہیں خوش آمدید کہا گیا۔ لاڑکانہ میں سندھی میڈیا کے نمائندوں اور پریس کلب کی جانب سے مشترکہ طور پر جناح باغ چوک پر مرکزی تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں سندھ کے نامور فنکاروں شیراز عباسی، نادر لاشاری، سجن مائری، راجہ سموں، عاشق مگسی، ظہور شیخ، منظور سموں، نعیم سموں، لیاقت سموں اور دیگر فنکاروں نے سندھی گیت پیش کیے جس پر شرکاء رقص کرتے رہے۔ تقریب میں پی پی چیئرمین بلاول زرداری کے پولیٹیکل سیکرٹری جمیل احمد سومرو، میئر انور علی لہر، چیئرمین ضلع کونسل اعجاز احمد لغاری، وائس چیئرمین اسد اللہ بھٹو، ٹاؤن چیئرمین شاہ رخ سیال، سرفراز کوکر، وقار بھٹو سمیت سیاسی سماجی تنظیموں کے رہنماؤں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ یوم ثقافت کے موقع پر پورا شہر سندھی ترانوں سے گونج اُٹھا شہریوں جن میں نوجوان بچے بوڑھے شامل تھے، رقص کرتے ہوئے خوشیاں منائیں اور ریلیاں نکالیں۔ ٹنڈو محمد خان میں مختلف سیاسی و سماجی تنظیموں سندھ یونائیٹڈ پارٹی، جسقم، شہری اتحادم پلے دار یونین کی جانب سے الگ الگ ریلیاں نکالی گئیں، جبکہ سندھ ترقی پسند پارٹی نے تقریب کا انعقاد کیا جس میں شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ اسٹیشن روڈ سے شروع ہونے والی ریلیاں پریس کلب پہنچ کرختم ہوئی۔ ریلیوں میں شرکت کرنے والوں نے سندھی ٹوپی اور اجرک پہن کر اپنی ثقافت سے محبت کا اظہار کیا اور سندھی ترانوں پر رقص کیا۔ قمبر علی خان میں سندھی کلچر ڈے کے حوالے سے طلبہ وطالبات نے سندھ کی ثقافت کو اُجاگر کرنے کے لیے سندھی ٹوپی اور اجرک پہن کر ثقافتی لباس میں اسپیشل ایجوکیشن اسکول میں مرکزی اسٹیج سجاکر سندھی گیتوں پر والہانہ رقص کیا اور مختلف ٹیبلوز پیش کرکے رنگا رنگ تقریب منعقد کی گئی جبکہ محفل موسیقی کے پروگرام میں لوک گلوگاروں وفنکاروں نے زبردست سندھی گانے گا کر حاضرین سے زبردست داد تحسین وصول کی اور بعد ازاں ریلی نکال کر شہر بھر میں ایک دوسرے کو مبارکباد پیش کی گئی۔ اس موقع پر سید ریاض حسین شاہ ، نورسولنگی ، نجم میمن ، مجاہد حسین جاگیرانی سمیت دیگر مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ سندھی ثقافت کادن منانے کا مقصد ملک میں ثقافت کا فروغ اور بھائے چارے کی فضا پروان چڑھانا ہے اور اب سندھی کلچرل ڈے نے صوبے میں رسمی تہوار کی حیثیت حاصل کرلی ہے، ہر سال اس کے انعقاد میں بڑھتے ہوئے رجحان کو دیکھتے ہوئے محسوس ہوتا ہے کہ شاید اسے کبھی ترک نہ کیا جاسکے۔ میہڑ میں سندھی میڈیا کی جانب سے اعلانیہ ثقافتی دن کے حوالے سے نیشنل پریس کلب کے زیر اہتمام ثقافتی ریلی کا انعقاد کیا گیا، 15 سے زائد سیاسی، سماجی، مذہبی تنظیموں، سول سوسائٹی، قوم پرست جماعتوں کی جانب سے ریلیاں نکال کر بیٹو چوک پر مرکزی ریلی میں شامل ہوگئے۔ حب کے مختلف علاقوں میں سندھی ثقافت کے دن کے موقع پر نوجوان نے ریلی نکالی، ثقافتی دن کے موقع پر نوجوان، بزرگ اور بچوں نے رقص کیا، نوجوان، بزرگ اور بچوں نے سندھی ٹوپی اجرک لباس زیب تن کیے۔ اس موقع پر نوجوان نے انسانی ہاتھوں کی زنجیر بنا کر یکجہتی کا اظہار کیا جبکہ سندھی ثقافت ریلی میں سندھی قومی گیتوں سے فضا گونج اُٹھی۔ ریلی میں بچے بزرگ بھی شریک ہوئے، نوجوانوں نے سندھی گیتوں پر رقص کیا جبکہ ملک اور قوم کے لیے دُعائیں بھی مانگی۔