مزید خبریں

Jamaat e islami

غزہ کی جنگ سرحدوں سے باہر نکل سکتی ہے جس کی کوئی حد نہیں ہوگی ،پاکستانی وزیر اعظم کا انتباہ

دبئی (مانیٹرنگ ڈیسک) نگراں وزیراعظم پاکستان انوار الحق کاکڑ نے کہا ہے کہ غزہ کی جنگ سرحدوں سے باہر نکل کر پورے خطے کو اپنی لپیٹ میں لے سکتی ہے جس کی کوئی حد نہیں ہوگی۔ نگراں وزیراعظم انوارالحق کاکڑ نے عرب میڈیا کو انٹرویو میں کہا کہ غزہ پٹی میں بمباری بند نہ ہوئی تو پورا خطہ جنگ کی لپیٹ میں آسکتا ہے۔ پاکستان مسئلہ فلسطین پر دو ریاستی حل کا حامی ہے۔ اسرائیل فلسطین میں شہریوں کا قتل عام کر رہا ہے جو قابل مذمت ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کر رہا ہے، مسئلہ کشمیر حل نہ ہوا تو خطے میں امن قائم نہیں ہو سکتا۔ ہم مسئلہ کشمیر کا اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل چاہتے ہیں۔ کیوں کہ کشمیری خود کہتے ہیں کہ کشمیر پاکستان کا اٹوٹ انگ ہے۔ نگراں وزیراعظم نے پاکستان سے غیر قانونی افغان تارکین کی واپسی سے متعلق پاکستان کے اصولی مؤقف سے بھی آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ سیاسی، سماجی اور دہشت گردی کے چیلنجز سے نمٹنے کے لیے پاکستان نے غیر قانونی تارکین کی واپسی کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ غیرقانونی مقیم غیرملکیوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ہو گی، ہم مہاجرین کے حوالے سے اپنی ذمے داریوں سے آگاہ ہیں مگر ہمارے ملک میں ایسے مہاجرین بھی قیام پذیر ہیں جن کے پاس کوئی شناختی دستاویزات نہیں ہیں۔ وزیراعظم انوارالحق کاکڑ نے کہا کہ کوپ 28 کے کامیاب انعقاد پر یو اے ای کی قیادت کو مبارکباد پیش کرتا ہوں، پاکستان کوپ 28 میں 30 ارب ڈالرز کے فنڈز کے قیام کا خیر مقدم کرتا ہے، دنیا کو اس وقت موسمیاتی تبدیلیوں جیسے چیلنجز کا سامنا ہے۔نگراں وزیراعظم نے بتایا کہ پاکستان کو موسمیاتی تبدیلی کی وجہ سے نقصان ہوا، یو اے ای کے اربوں ڈالر کے اعلان سے عالمی سطح پر موسمیاتی تبدیلی سے نمٹنے میں مدد ملے گی۔