مزید خبریں

Jamaat e islami

فضل الرحمن اور نواز شریف انتخابات سے فرار چاہتے ہیں، نثار کھوڑو

لاڑکانہ (نمائندہ جسارت) سینیٹر و صدر پیپلز پارٹی سندھ نثار کھوڑو نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمن اور نواز شریف انتخابات سے فرار کا راستہ چاہتے ہیں، مولانا فضل الرحمن کی انتخابات کے لیے ماحول فراہم کرنے کی باتیں الیکشن سے بھاگنے کے مترداف ہے، ن لیگ پنجاب میں اور جے یو آئی (ف) کے پی کے میں غیر مقبول ہوچکی ہیں، نواز شریف اور مولانا فضل الرحمن عوامی حمایت کھونے کے ڈر سے بہانے بنا کر الیکشن میں تاخیر چاہتے ہیں، مولانا فضل الرحمن نے ایسی باتیں کرکے اپنی سیاست پر سوالیہ نشان لگادیا ، کیا مولانا فضل الرحمن کسی کے کہنے پر سیاست کررہے ہیں؟ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کو پنجاب میں پذیرائی نہیں مل رہی، اس لیے وہ انتخابات سے گھبرا رہے ہیں، الیکشن 8 فروری ہی کو ہونے چاہییں، تاخیر کسی صورت قبول نہیں، ملک عوام کی حکمرانی کے لیے بنا ہے اور اس وقت ملک عوام سے چھینا ہوا ہے، نگراں حکومت کا لمبا عرصہ حکومت میں رہنے سے کیا ملک میں پی سی او لگایا گیا ہے؟ الیکشن کمیشن سے مطالبہ کرتے ہیں کہ نئی حلقہ بندیوں میں تبدیلیوں کی وجہ سے عدالتوں میں اعتراضات پر فیصلے کا ٹائم فریم مقرر کیا جائے، حلقہ بندیوں میں تبدیلیوں کے خلاف عدالتی فیصلے ہونے کا ٹائم فریم نہیں دیا گیا، عوام الیکشن اور الیکشن شیڈول کے انتظار میں ہے، الیکشن کمیشن انتخابات میں تاخیر کے خدشات ختم اور 8 فروری کے لیے فوری الیکشن شیڈول جاری کرے، ن لیگ نے 18 ویں ترمیم کے خاتمے کو اپنی جماعت کے منشور میں شامل کیا ہے، 18 ترمیم کے خلاف عمران خان بھی تھے اور نواز شریف بھی خلاف ہیں، کنکرنٹ لسٹ کے خاتمے کے بعد وفاق نے اب تک وہ محکمے صوبوں کے حوالے نہیں کیے، اگر وفاقی محکمے صوبوں کے حوالے کیے جائیں تو وفاق کے خرچے کم ہوں گے، آبادی بڑھنے کے باجود تاحال نیا این ایف سی ایوارڈ نہیں دیا گیا، جب تک نیا این ایف سی ایوارڈ آئے تب تک این ایف سی کے صوبوں کے حصے کو بڑھایا جائے، نوازشریف اور عمران خان نے عوام سے دھوکا کیا ہے، 18 ویں ترمیم ختم کرنے کی باتیں کرنے والے قوم کے مجرم ہیں، کالاباغ ڈیم بنانے والے بھی نوازشریف تھے اور این ایف سی ، صوبائی خودمختاری اور اب 18 ویں ترمیم کے خلاف بھی نواز شریف ہیں، پیپلز پارٹی حکومت میں آکر این ایف سی میں صوبوں کا حصہ مزید بڑھائے گی، حلقہ بندیوں کی تبدیلی الیکشن کمیشن نے آبادی کی بنیاد پر کی ہے، پیپلز پارٹی کے خلاف جنہیں سازشیں کرنی ہیں کرلیں، سندھ کے لوگ تیر کے نشان پر متحد ہیں، پیپلز پارٹی نے بلدیاتی انتخابات میں تعصب ،لسانیت اور فرقہ واریت کا مقابلہ کرکے کامیابی حاصل کی، انتخابات میں اتحادوں کا مقابلہ کرکے عوام کی قوت سے کامیابی حاصل کریں گے، لاڑکانہ عوامی اتحاد کمزور ہوچکا، اس اتحاد کو کچھ لوگوں نے چھوڑ کر پیپلز پارٹی میں شمولیت کرلی۔