مزید خبریں

Jamaat e islami

سقوط ڈھاکااجتماعی غلطیوں سے سبق سیکھنے کا پیغام ہے‘ دردانہ صدیقی

کراچی (نمائندہ جسارت) حلقہ خواتین جماعت اسلامی پاکستان کی سیکرٹری جنرل دردانہ صدیقی نے کہا ہے کہ 16دسمبر 1971ء سقوط ڈھاکا قومی تاریخ کا وہ سیاہ باب ہے جب سیاسی مفادات کی تکمیل کی خاطر نظریہ پاکستان کو لہو رنگ کیا گیا، قوموں کی تاریخ میں سقوط ڈھاکا جیسے سانحات اس وقت رونما ہوتے ہیں جب اپنوں کی غداری اور دشمن کی مکاری یکجا کارفرما
نظر آئے۔ماضی کے اس تجربے کو کافی نہ گردانتے ہوئے ہم نے پھر سے دشمن کو اپنی صفوں میں دراڑیں ڈالنے کا موقع فراہم کیا تو معصوم نونہالان وطن کا قیمتی لہو سانحہ آرمی پبلک اسکول کی صورت میں ملکی تاریخ پر بدنما داغ بن گیا،جس کے عوض درجنوں ماؤں کی گودیں اپنے جگر گوشوں سے محروم ہو گئیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سقوط ڈھاکا اور سانحہ آرمی پبلک اسکول کے حوالے سے اپنے خصوصی بیان میں کیا ۔انہوں نے کہا کہ وطن عزیز کے سیاستدانوں، تمام ریاستی اداروں کو سانحہ سقوط ڈھاکا سے سبق حاصل کرنا چاہیے،اپنی صفوں میں اتحاد اور اتفاق پیدا کرنے کے لیے ملک میں بسنے والے تمام لوگوں کو انکا جائز حق دیا جائے۔ضرورت اس بات کی ہے کہ گوادر ، بلوچستان اور دیگر محروم علاقوں کے سلگتے مسائل کو حل کر کے محرومین کے زخموں پر مرہم رکھا جائے، وطن عزیز میں اسلامی قوانین کا حقیقی نفاذ ہو تو یکساں حقوق کی فراہمی کا خواب شرمندہ تعبیر ہوگا، یہی نظریہ پاکستان کی منزل مراد ہے۔