مزید خبریں

Jamaat e islami

آج تک مشرقی پاکستان میں قربانیاں دے ر ہے ہیں‘عائشہ سید

کراچی (نمائندہ جسارت) ڈائریکٹر پبلک ریلیشنز ویمن ونگ جماعت اسلامی پاکستان و سابق رکن قومی اسمبلی عائشہ سید نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ16 دسمبر ہماری تاریخ کا وہ سیاہ ترین دن ہے جب 1971ء میں سقوط مشرقی پاکستان ہوا،تو دوسری جانب 2014ء میں سانحہ اے پی ایس، جس میں معصوم پھول جیسے بچے دہشت گردی کا نشانہ بنے۔سانحہ اے پی
ایس کے بعد سیاسی قیادت نے ماؤں اور پاکستانی عوام کو یقین دلایا تھا کہ ان معصوم بچوں کی شہادت رائیگاں نہیں جائے گی۔لیکن 8 سال ہونے کو ہیں،ان کرداروں کو ابھی تک سزائیں نہیں دی جاسکیں۔انھوں نے کہا کہ پاکستان ایک نظریاتی ملک ہے،جو کہ لاالہ الااللہ کے نظریے کے تحت وجود میں آیا۔ پاکستان حاصل کرنے کے بعد ہم نے اس نظریے سے انحراف کیااور پاکستان دولخت ہوا۔ حالانکہ جدوجہد آزادی میں بنگال کے مسلمانوں کا کلیدی کردار تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ جماعت اسلامی آج تک بنگلا دیش میں قربانیاں دے رہی ہے۔ جماعت اسلامی بنگلا دیش کو اسلام اور پاکستان سے محبت کی سزا دی جا رہی ہے۔ لیکن سلام ہے ان مجاہدوں کو جو باطل کے سامنے نہیں جھکے اور پھانسی پر جھول گئے۔ گزشتہ روز بھی جماعت اسلامی بنگلا دیش کے امیر ڈاکٹر شفیق الرحمن کو گرفتار کیا گیا۔جماعت اسلامی بنگلا دیش پاکستان کی عافیت کے لیے اپنی جانوں کا صدقہ دے رہی ہے،مگر افسوس کہ پاکستان خاموش ہے۔