مزید خبریں

Jamaat e islami

ملک میں معاشی بدحالی ہے ،پر ڈیفالٹ کاخدشہ نہیں،مراد علی شاہ

حیدرآباد (اسٹاف رپورٹر) وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہاہے کہ مشکل معاشی صورتحال ضرور ہے لیکن ڈیفالٹ کا کوئی خدشہ نہیں ہے معاشی بدحالی کی ذمے دار گزشتہ حکومت ہے۔سندھ حکومت کی جانب سے متاثرین کواپناگھر بنانے کے لیے 3 لاکھ روپے دے رہے ہیں اورصوبے کے تمام علاقوں سے 80 فیصد پانی کی نکاسی ہوچکی ہے اور بقیہ علاقوں سے بھی پانی کی نکاسی کا کام جاری ہے ۔ان خیالات کااظہار انہوںنے سہون کے سیلاب متاثرہ علاقے کے دورے اور میڈیاسے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ وزیر اعلیٰ سندھ سہون شریف پہنچے جہاں انہوں نے سیلاب متاثرہ علاقوں کا دورہ کرکے متاثرین سے ملاقاتیں کیں۔اس موقع پر وزیر اعلیٰ سندھ گوٹھ بنگل بوزدار بھی گئے جہاںانہوںنے بارشوں کے باعث تباہ شدہ مکانات کامعائنہ کیا ۔ اس موقع پر انہوںنے کہا کہ متاثرین کی تکالیف کا ہمیں احساس ہے اور ہم ان کی بحالی ودیگر مسائل کے حل کے لیے ہرممکن اقدامات کررہے ہیں۔وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ سہون میں 57 لوگ بارشوں اور سیلاب کے باعث فوت ہوئے ہیں جبکہ متاثرین کو خیمے اور راشن کی فراہمی کو یقینی بنایاجارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے جتنا کچھ بھی کیا ہے وہ بھی کم ہے اورہماری بھرپورکوشش ہے کہ متاثرین کوجلد از جلد گھر بنا کر دیے جائیںجبکہ گھروں کے سروے کاکام بھی تقریباً مکمل ہوچکا ہے۔ بعد ازاں وزیراعلیٰ سندھ بوبک سہون پہنچے جہاں انہوں نے منچھربند پر قائم دیہاتوں کا بھی معائنہ کیا اورمتاثرین سے ملاقات کرکے ان کے مسائل معلوم کیے۔اس موقع پر انہوں نے سند ھ گورنمنٹ پرائمری اسکول دوست محمد روڈانی کی متاثرہ عمارت کا بھی معائنہ کیا اور متاثرین کے ساتھ خیمے میں بیٹھ کرملاقات کی اور ان سے راشن و طبی سہولیات کی فراہمی سے متعلق دریافت کیااور انہوں نے متعلقہ افسران کودیہاتوں میں مچھرمار اسپرے کروانے کی ہدایت کی ۔میڈیا کے نمائندوں سے باتیں کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا کہ اس سال کی بارشیں اور سیلاب صوبے کی تاریخ کا بدترین سیلاب تھا۔انہوں نے کہا کہ یہ پانی نشیبی علاقے کی وجہ سے بلوچستان سے سیدھا منچھر آیا،ہم پہلے دن سے ہی لوگوں کے ساتھ ہیں تاکہ ان کے مسائل کم کیے جاسکیں جبکہ بقیہ متاثرین کی بحالی کے لیے کوشاں ہیں۔