مزید خبریں

Jamaat e islami

پاکستان گرین انرجی کے حوالے سے اگلا سعودی عرب بن سکتا ہے ،جرمن سفیر

کراچی (کامرس رپورٹر)جرمنی کے سفیر الفریڈ گراناس نے پاکستان کو درپیش توانائی کے بحران کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان تیل کے حوالے سے نہیں بلکہ گرین انرجی کے حوالے سے اگلا سعودی عرب بن سکتا ہے کیونکہ پاکستان میں گرین ہائیڈروجن کافی مقدار پیدا کرنے کی بڑی صلاحیت ہے جسے جرمنی کو بھی برآمد کیا جا سکتا ہے۔ جرمنی گرین ہائیڈروجن کی کچھ پیداوار کررہا ہے تاہم یہ ناکافی ہے لہٰذا گرین انرجی ایک ایسا شعبہ ہے جہاں جرمنی کو برآمدات کی بہت زیادہ گنجائش موجود ہے۔جرمن کمپنیاں گرین ہائیڈروجن کی پیداوار کے لیے پاکستان میں سرمایہ کاری میں دلچسپی رکھتی ہیں اور وہ شمسی، ہائیڈرو، ونڈ اور روایتی توانائی کے کچھ حصوں کو یکجا کرنے کے لیے ضروری ٹیکنالوجی لا سکتے ہیں تاکہ مستحکم توانائی کی پیداوار اور فراہمی ہوسکے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری( کے سی سی آئی)کے دورے کے موقع پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میںکراچی میں تعینات جرمن قونصل جنرل ڈاکٹر روڈیگر لوٹز، جرمن سفارتخانے کے فرسٹ سیکریٹری کرسچن بوٹچر، چیئرمین بزنس مین گروپ( بی ایم جی) زبیر موتی والا، وائس چیئرمین بی ایم جی انجم نثار، سینئر نائب صدر کے سی سی آئی توصیف احمد، نائب صدر محمد حارث اگر، ڈپلومیٹک مشنز و امبیسیز لائژن سب کمیٹی کے چیئرمین ضیاء العارفین، سابق صدور مجید عزیز اور محمد ادریس کے علاوہ کے سی سی آئی کی منیجنگ کمیٹی کے اراکین بھی شریک تھے۔جرمن سفیر کا کہنا تھا کہ اس وقت پاکستان میں سرمایہ کاری کے حالات اُتار چڑھائو جاری ہے جس پر توجہ دینے کی ضرورت ہے حالانکہ جرمن سرمایہ کار یہاں سرمایہ کاری کرنا چاہتے ہیں۔