مزید خبریں

Jamaat e islami

انڈیکس41700پوائنٹس کی حد پر بحال ہو گیا

کراچی(کامرس رپورٹر)آئی ایم ایف اور پاکستان کے درمیان جائزہ اجلاس میںتاخیر کے خدشے ، ملک میں گیس بحران بڑھنے اور زرمبادلہ کے ذخائر میں کمی،پاکستانی روپیہ کی قدر میں گراوٹ ،کرنٹ اکائونٹ خسارہ بڑھنے جیسے عوامل اوروزیراعظم پاکستان میاں شہباز شریف کی آئی ایم ایف کی جانب سے زنجیریں پہنائے جانے کی خبر سے سرمایہ کاروں کی جانب سے محتاط رویہ اختیار کئے جانے کے سبب پاکستان اسٹاک مارکیٹ بدھ کوسست روی کا شکار رہی جس کی وجہ سے شیئرز مارکیٹ کاروباری اتار چڑھائو کے لپیٹ میں رہی ،ٹریڈنگ کے دورا ن ایک موقع پر انڈیکس 41500پوائنٹس کی کم سطح تک گر گیا تھا مگر کاروبار کے اختتام سے قبل پراپرٹیز اورفوڈزسیکٹر میں ہونے والی معمولی خریداری سے مارکیٹ دوبارہ مثبت زون میں داخل ہوگئی اور انڈیکس41700پوائنٹس کی حد پر بحال ہو گیا مگر مارکیٹ میں ملے جلے رجحان پر بند ہو ئی ۔۔60فیصد سے زائد شیئرز کی قیمتوں میں کمی ہوئی جبکہ کاروباری حجم منگل کے مقابلے میں 1.28 فیصد زائد رہاتاہم معمولی تیز کے باوجود مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 8ارب 74کروڑ روپے سے زائد کم ہوگیا۔بدھ کے روز شیئرز مارکیٹ میں سرمایہ کاروں کی جانب سے پراپرٹیز،فوڈز،آٹو،ٹیلی کام، سیمنٹ گیس،اسپننگ،پیٹرول اوربینکنگ سیکٹر میں کاروباری سرگرمیاںہونے کے باوجود کاروبار میں اتارچڑھائو کا سلسلہ دن بھر جاری رہا۔کاروبار کے اختتام پرکے ایس ای100 انڈیکس 23.32پوائنٹس بڑھ کر41737.62 پوائنٹس پر بند ہوا۔