مزید خبریں

Jamaat e islami

امریکا نے عراق کے خلاف جھوٹے ثبوت دیے ، سابق فرانسیسی وزیر دفاع

پیرس (انٹرنیشنل ڈیسک) فرانس کی سابق خاتون وزیر دفاع مائیکل ایلیٹ میری نے انکشاف کیا ہے عراق پر امریکا کی فوج کشی غلط اورجعلی ثبوتوں کی بنیاد پر کی گئی تھی۔ان کا کہنا تھا کہ پیرس نے اس وقت امریکی قیادت کی طرف سے عراق پر حملے کے لیے پیش کردہ جواز مسترد کر دیے تھے۔ امریکا نے عراق میں گندم کے گوداموں کی تصاویر کو میزائل ڈپو بنا کرپیش کیا تھا اور ہم جانتے تھے کہ یہ گندم کے گودام ہیں۔انہوں نے کہا کہ 2002ء میں ان کے امریکی ہم منصب ڈونلڈ رمز فیلڈ نے یورپی وزرائے دفاع کے ساتھ ملاقات میں امریکی سیٹلائٹ سے لی گئی تصاویر پر روشنی ڈالی۔ اس میں انہوں نے عراقی گودام دکھایا تھا اور دعویٰ کیا تھا کہ یہ جگہ میزائل داغنے کے پلیٹ فارم کے طور پر استعمال کی جاتی ہے۔ ڈونلڈ رمزفیلڈ نے یورپی ممالک کو شامل کرنے کی ہر ممکن کوشش کی۔ 2003 میں عراق کے خلاف جنگ شروع کرنے کا جواز پیش کرنے کے لیے امریکا کی جانب سے عوامی طور پر پیش کی گئی دستاویزات سراسر غلط حقائق پر مبنی تھیں۔اس ووران امریکی ترجمان کولن پاول نے صدر بش کے موقف کو نہیں اپنایا ۔ میری جب ان سے ملاقات ہوئی تو انہوں نے عراق پر چڑھائی کے جعلی ثبوتوں کا اعتراف کیا تھا۔