مزید خبریں

Jamaat e islami

سوات ، عسکریت پسندوں کی موجودگی کے خلاف احتجاجی مظاہرے

سوات(مانیٹرنگ ڈیسک)سوات سے ملحقہ پہاڑوں پر عسکریت پسندوں کی موجودگی کے خلاف احتجاج کرنے کے لیے پورے سوات میں بڑی تعداد میں لوگ سڑکوں پر نکل آئے، انہوں نے زور دیا کہ وہ کسی بھی عناصر کو علاقے میں محنت سے حاصل کیے گئے امن کو سبوتاژنہیں کرنے دیں گے۔ احتجاجی مظاہرے ہم سوات میں امن چاہتے ہیں اور دہشتگردی سے انکار کے
عنوان سے تحصیل خوازہ خیلہ میں مٹہ چوک اور تحصیل کبل کے کبل چوک کے نزدیک کیے گئے۔احتجاجی مظاہرین نے سفید اور کالے جھنڈے تھامے ہوئے تھے، انہوں نے نعرے بھی لگائے کہ ہم سوات اور خیبرپختونخوا میں امن چاہتے ہیں۔احتجاجی مظاہرہ سول سوسائٹی کے ایکٹوسٹ ڈاکٹر امجد علی، ایڈووکیٹ علی نامدار، غیرت یوسفزئی، ابنِ امین یوسفزئی، رحمت علی، فواد خان، احتشام الحق، مہتاب خان، انور علی اور آفتاب خان کی قیادت میں نکالا گیا، ان کا کہنا تھا کہ سوات کے عوام کسی بھی عناصر سے دوبارہ بیوقوف نہیں بنیں گے۔ڈاکٹر امجد علی نے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم پرامن لوگ ہیں اور ہر قیمت پر پائیدار امن چاہتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ان عناصر کو معلوم ہونا چاہیے کہ ہم نے لاتعداد قربانیاں دے کر امن حاصل کیا ہے، ہم کسی کو بھی اس امن کو سبوتاژ کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔احتجاجی مظاہرے میں ایڈووکیٹ علی نامدارکا کہنا تھا کہ علاقہ مکین چاہتے ہیں کہ ضلعی انتظامیہ اور صوبائی حکومت جوڈیشل کمیشن کے ذریعے واقع کی فوری تحقیقات کرے اور اس کے نتائج سے پوری قوم کو آگاہ کرے۔ان کا کہنا تھا کہ سوات میں امن کو یقینی بنانا سیکورٹی اداروں کی ذمہ داری ہے اور اگر وہ ایسا کرنے میں ناکام رہے تو یہ آئین کی خلاف ورزی ہوگی۔