مزید خبریں

Jamaat e islami

دولت مشترکہ کھیلوں میں پاکستان نے8تمغے حاصل کیے

برمنگھم میں ہوئے22ویں دولت مشترکہ کھیلوں میں پاکستانی کھلاڑیوں نے8 تمغے جیتے جس میں 2 طلائی ،3چاندی اور3 کانسی کے تمغے شامل تھے۔ ان کھیلوں میں پاکستان کے 67 کھلاڑیوں نے شرکت کی تھی جس میں 42 مرد اور 25 خواتین شامل تھیں۔ 4 سال قبل گولڈ کوسٹ میں ہوئے دولت مشترکہ کھیلوں میں کل 5 تمغے جیتے تھے جس میں ایک طلائی اور 4 کانسی کے تمغے شامل تھے۔ ان کھیلوں میں پاکستان کے46 مرد اوردس خواتین کھلاڑیوںیعنی کل 56 کھلاڑیوں نے شرکت کی تھی۔ اس مرتبہ پاکستان کو پہلا طلائی تمغہ ویٹ لفتنگ میں109 کلوگرام سے زیادہ وزن کے مقابلوں میں محمد نوح دستگیر بٹ نے حاصل کیا تھا ۔ انہوں نے کل405 کلوگرام وزن اٹھاکر دولت مشترکہ کھیلوں کا ریکارڈ قائم کیا تھا۔ وہ اسنیچ میں173 کلوگرام اور کلین اینڈ جرک میں232 کلو کرام وزن اٹھانے میں کامیاب رہے تھے ْ۔ دونوں وزن دولت مشترکہ کھیلوں کا نیا ریکارڈ ہے۔2018 میں کانسی کا تمغہ جیتا تھا تب105 کلو وزن سے زیادہ کے مقابلے ہوئے تھے۔جولین تھرو میں ارشد ندیم طلائی تمغہ جیتنے میں کامیاب ہوئے۔انہوں نے 90.18 میٹر دور بھالا پھیک کر ان کھیلوں کا نیا ریکارڈ بنایا۔ انکی یہ کارکردگی سب سے اچھی کارکردگی بھی تھی۔ٹوکیو کے اولمپگ کھیلوں نے انہوں نے84.62 میٹر بھالا پھیک کر پانچواں مقام حاصل کیا تھا جبکہ عالمی ایتھلیٹکس میں وہ86.16 میٹر فاصلے کے ساتھ پانچویں نمبر پر ہی رہے تھے۔کشتی میں پاکستان کے 6 پہلوانوں نے شرکت کی جس میں سے 5 پہلوان کوئی نہ کوئی تمغہ جیتنے میں کامیاب رہے۔ 86 کلوگرام فری اسٹائیل میں محمد انعام نے نقرئی تمغہ حاصل کیا۔ فائنل میں وہ بھارت کے پہلوان دیپک پونیا سے پوائنٹس پر ہارگئے تھے۔125 کلوگرام فری اسٹائیل میں زمان انور نے چاندی کا تمغہ جیتا تھا۔ فائنل میں کنیڈا کے پہلوان امر دہشی نے انہیں پوائنٹس پرشکست دی تھی۔ 74کلوگرام کے فری اسٹائل مقابلے میں محمد طاہر چاندی کا تمغہ جیتے تھے۔ فائنل میں انہیں بھارت کے نوین ملک نے پوائنٹس پر شکست دی تھی۔ عنایت اللہ نے65 کلوگرام کے فری اسٹائل مقابلوں میں اور علی اسد نے57 کلوگرام کے فری اسٹائل مقابلوں میں کانسی کے تمغے جیتے۔شاہ حسین شاہ نے جوڈو میں 90 کلوگرام کے مقابلوں میں کانسی کا تمغہ جیتا۔ دولت مشترکہ کھیلوں میں وہ دوسری مرتبہ کوئی تمغہ جیتنے میں کامیاب رہے ہیں۔ انہوں نے2014 میں گلاسگو میں ہوئے دولت مشترکہ کھیلوں میںچاندی کا تمغہ حاصل کیا تھا۔ انکے والدحسین شاہ ایک باکسر تھے اور انہوں نے1988 میں سیول میں ہوئے اولمپک کھیلوں میں کانسی کا تمغہ جیتا تھا۔پاکستان کی خواتین ٹیم نے ٹوئنٹی ٹوئنٹی بین الاقوامی کرکٹ کے میچوں میں شرکت کی مگر وہ اپنے تینوں لیگ میچ ہارنے کے بعد ٹورنامنٹ سے باہر ہوگئی تھی۔ ان مقابلوں میں طلائی تمغہ آسڑیلیا نے جیتا اس نے فائنل میں بھارت کو شکست دی۔ تیسری پوزیشن نیوزی لینڈ نے انگلینڈ کو ہراکر حاصل کی۔ پاکستانی مردوں کی ہاکی ٹیم کی کارکردگی بھی خراب رہی۔ اس نے کینڈا کو4–3 سے شکست دیکر ساتواں مقام حاصل کیا۔