مزید خبریں

Jamaat e islami

فرید پراچہ کی مفتی تقی عثمانی ، مفتی منیب ودیگرسے ملاقات

کراچی/لاہور(نمائندہ جسارت) نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان ڈاکٹر فرید احمد پراچہ کی قیادت میں جماعت اسلامی کے ایک وفد نے دارالعلوم کراچی میں مولانا مفتی محمد تقی عثمانی سے ملاقات کی اور حرمت سود کے حوالے سے ان کی عدالتی اور علمی خدمات پر ان کا شکریہ ادا کیا ۔ وفد میں امیر جماعت اسلامی سندھ محمد حسین محنتی ، جمعیت اتحاد العلماء کراچی
کے ناظم مولانا مفتی عبد الوحید ، محمود حامد ، عبد الرشید فاروقی و دیگر شامل تھے ۔ مفتی تقی عثمانی نے جماعت اسلامی کے وفد سے اتفاق کرتے ہوئے کہا کہ پہلے مرحلے پر اسٹیٹ بینک سمیت تمام بینکوں کا سپریم کورٹ سے اپنی اپیلیں واپس لینا ضروری ہے ۔ اس کے بغیر سود سے نجات کا کوئی ہدف حاصل نہیں کیا جا سکتا ۔ مفتی تقی عثمانی نے بتایا کہ انہوںنے تمام بینکوں کے صدور کے اُٹھائے گئے سوالات کے قرآن و حدیث اور جدید معاشیات کی روشنی میں بہترین جوابات دیے ہیں اور انہیں قائل کیا ہے کہ وہ سپریم کورٹ کے بجائے خود وفاقی شرعی عدالت سے رجوع کریں ۔ مفتی تقی عثمانی نے بلاسود بنکاری کے سلسلے میں بعض عملی اقدامات کی ضرورت سے اتفاق کیا اور اس سلسلے میں اپنا کردار ادا کرنے کا وعدہ کیا ۔ علاوہ ازیں وفد نے وفاق ایوان ہائے تجارت و صنعت پاکستان کے سینئر وائس پریذیڈنٹ سلیمان چاولہ ، سائٹ ایسوسی ایشن پاکستان ہوزری مینوفیکچر نگ ایسوسی ایشن کے صدر محمد جاوید بلوانی ، کورنگی ایسوسی ایشن اف ٹریڈ اینڈ انڈسٹری (کاٹی) کے صدر محمد سلمان اسلم ، جنرل سیکریٹری نہال اختر ، ڈپٹی سیکریٹری عبد الوہاب سے بھی ملاقاتیں کیں ۔ علاوہ ازیں نائب امیر جماعت اسلامی ڈاکٹر فرید احمد پراچہ نے وفد کے ہمراہ دورۂ کراچی کے موقع پر معروف دینی مدارس کے علماء کرام سے ملاقاتیں کیں۔ ملاقاتوں میںحرمت سود پر شرعی کورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل پر علمائے کرام سے صلاح مشورے کیے اور آئندہ کے لائح عمل پر غوروخوض کیا گیا۔ وفد میں امیر جماعت اسلامی سندھ محمد حسین محنتی ، ناظم اعلیٰ جمعیت اتحاد العلما مولانا مفتی عبدالوحید ،امیر جماعت اسلامی ضلع کیماڑی مولانا فضل احد اورمولانا نسیم خان بھی شامل تھے۔ ڈاکٹر فرید احمد پراچہ کی سربراہی میں وفد نے مہتم جامعہ نعیمیہ کراچی مفتی منیب الرحمن، مہتمم جامعہ بنوری ٹائون مولانا محمد سلیمان بنوری، جامعہ صفہ کراچی مفتی محمد زبیر اور مہتمم جامعہ ستاریہ کراچی مولانا محمد سلفی سے ملاقاتیں کیں۔علما کرام نے فرید احمد پراچہ کی کوششوں کو سراہا اور بھر تعاون کا یقین دلایا۔