مزید خبریں

Jamaat e islami

امید ہے پاکستان 2023 ء کے بعد بھی جی ایس پی پلس کا حصہ رہے گا ، وزیر اعظم

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک+ اے پی پی+ صباح نیوز) وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ یورپی یونین میں جی ایس پی پلس سے تجارتی حجم بڑھے گا، امید ہے پاکستان اس معاہدے کا 2023 کے بعد بھی حصہ رہے گا۔ پاکستان میں یورپی یونین کی نئی تعینا ت ہونے والی سفیر ڈاکٹر رینا کونیکا نے وزیراعظم سے ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران شہباز شریف نے کہا کہ پاکستان یورپی یونین کے رکن ممالک کے ساتھ اپنے تاریخی اور تعاون پر مبنی دوطرفہ تعلقات کو بہت اہمیت دیتا ہے، پاکستان اور یورپی یونین کے مابین شراکت داری کو مزید مستحکم بنانے کے لیے اعلیٰ سطح کے تبادلوں کی ضرورت ہے، پرامن اور مستحکم افغانستان خطے کے لیے اہم ہے۔ اس موقع پر وزیراعظم نے یورپی یونین کونسل کے صدر چارلس مشیل اور یورپی کمیشن کی صدر ارسولاوان ڈیرلیین کے ساتھ اپنی حالیہ ٹیلیفونک گفتگو کا حوالہ دیتے ہوئے اس اعتماد کا اظہارکیا کہ یورپی یونین کے پارلیمانی وفود کے پاکستان کے آئندہ دوروں کے ساتھ ساتھ اگلے یورپی یونین پاکستان تزویراتی بات چیت کے منصوبے کے تحت سیاسی اور سیکورٹی ڈائیلاگ سے دونوں فریقین کیدوران مزید ٹھوس تعاون کی راہ ہموار ہوگی۔ وزیراعظم نے بڑھتی ہوئی شراکت داری کو مستحکم کرنے کے لئے مسلسل اعلیٰ سطح کے تبادلوں کی اہمیت پر بھی زور دیا، رواں سال پاکستان اور یورپی یونین کے تعلقات کے 60 سال مکمل ہونے پر انہوں نے اس سنگ میل کو دونوں اطراف سے مناسب طریقے سے منانے پر زور دیا۔ڈاکٹر رینکا کونیکا نے وزیراعظم کی جانب سے خیر مقدم پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ وہ پاکستان میں اپنی تعیناتی کے دوران دو طرفہ تعلقات کو مزید مستحکم بنانے کے لیے بھرپور کردار ادا کریں گی۔قبل ازیں اقلیتوں کے قومی دن کے مو قع پر اپنے پیغام میں وزیر اعظم شہباز شریف نے کہا کہ غیر مسلم شہری ہماری قومی ساخت کا ناگزیر حصہ ہیں، ہمارے آئین میں مذہب کی آزادی اور ہماری اقلیتوں کی جان ومال اور املاک کی تکریم کو باقاعدہ قانونی شکل دی گئی ہے۔مزید برآں وزیراعظم کے زیر صدارت اعلیٰ سطح اجلاس ہوا جس میں سیلاب متاثرین کی بحالی کے اقدامات کا جائزہ لیا گیا، شہباز شریف نے متعلقہ اداروں کو ہدایت کی کہ سیلاب اور بارشوں کے متاثرین کی آبادکاری کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں، این ڈی ایم اے اور این ایچ اے کا متاثرین کو امداد اور تباہ شدہ انفرااسٹرکچر کی بحالی کے لیے کردار قابل تحسین ہے، مزید بارشوں کے امکان کے تناظر میں اپنی صلاحیتوں کو مزید بہتر بنائیں۔