مزید خبریں

Jamaat e islami

بلدیاتی انتخابا ت میں تاخیر‘ وفاق و سندھ حکومت سے تحریری جواب طلب

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ ہائیکورٹ میں صوبے میں بلدیاتی انتخابات کے دوسرے مرحلے میں تاخیر کے خلاف جماعت اسلامی اور پی ٹی آئی کی درخواست کی سماعت، عدالت نے فریقین کو 22 اگست کو تحریری جواب جمع کرانے کی ہدایت کردی۔ گزشتہ روزدوسرے مرحلے میں بلدیاتی انتخابات میں تاخیر کے خلاف جماعت اسلامی اور پی ٹی آئی کی درخواست کی سماعت ہوئی جہاں وفاقی اور صوبائی حکومت نے جواب جمع کرانے کیلیے مہلت طلب کرلی۔ جماعت اسلامی کے وکیل عثمان فاروق کا کہنا تھا کہ ایڈمنسٹریٹر کراچی سیاسی مفادات کیلیے سرکاری مشینری استعمال کررہے ہیں، مرتضی وہاب کو سرکاری مشینری استعمال کرنے سے روکا جائے۔ ڈپٹی اٹارنی جنرل کا کہنا تھا کہ بلدیاتی انتخابات سے متعلق عدالت عظمیٰ میں 15 اگست کو درخواست کی سماعت ہوگی۔ عثمان فاروق کا کہنا تھا کہ 28 اگست بلدیاتی انتخابات کی دوبارہ تاریخ مقرر کی گئی ہے۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کیا آپ بلدیاتی انتخابات ملتوی کرانا چاہتے ہیں؟ جماعت اسلامی کے وکیل کا کہنا تھا کہ ہم تو فوری بلدیاتی انتخابات چاہتے ہیں، الیکشن کمیشن نے بیلٹ پیپرز ریٹرننگ افسران کو بھیج دیے تھے، بیلٹ پیپرز ان کے پاس ہیں دھاندلی کرسکتے ہیں۔ تحریک انصاف کے وکیل نے کہا کہ بیلٹ پیپرز کو محفوظ بنانے کا حکم دیا جائے۔ عدالت نے کہا کہ فریقین کا جواب آنے دیں ہر چیز کا تفصیلی جائزہ لیں گے، بیلٹ پیپرز کی نگرانی کیلیے ہم ناظر تو مقرر کرنے سے رہے۔ درخواست جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمان اور پی ٹی آئی رہنما اشرف جبار قریشی کی جانب سے دائر کی گئی ہے۔