مزید خبریں

Jamaat e islami

انگریز کے غلاموں سے آزادی کیلیے تحریک پاکستان طرز کی جدوجہد ناگزیر ہے،فرید پراچہ

حیدرآباد (اسٹاف رپورٹر) جماعت اسلامی ضلع حیدرآباد کے تحت ایک روزہ دعوتی و تربیتی اجتماع عام مسجد قبا ہیر آباد میں منعقد ہوا۔ اجتماع عام سے نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان ڈاکٹر فرید پراچہ، نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان راشد نسیم، نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی،امیر جماعت اسلامی سندھ محمد حسین محنتی، امیر جماعت اسلامی ضلع حیدرآباد عقیل احمد خان، نائب قیم جماعت اسلامی سندھ عبدالقدوس احمدانی اور عبدالوحید قریشی نے بھی خطاب کیا۔ اجتماع عام میں کارکنان سمیت عوام نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ اس موقع پر نائب امراءعبدالقیوم شیخ، ڈاکٹر سیف الرحمن، قاری محمد افصل شاکر، جنرل سیکرٹری ظہیر الدین شیخ اور عبدالباسط خان بھی موجود تھے۔ اجتماع عام سے خطاب کرتے ہوئے جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیر ڈاکٹر فرید فراچہ نے کہا کہ ملک میں تبدیلی، انگریز کے غلاموں سے آزادی کے لیے قوم کوایک بار پھر تحریک پاکستان کی طرز پر جدوجہد کرنا ہوگی، ملک میں تبدیلی کے لیے معاشرے کو بدلنا شرط ہے،کرپشن نے ملک کی جڑیں کھوکھلی کردی ہیں،دیانتدار اور باکردار قیادت کے بغیر لوٹ کھسوٹ کا یہ سلسلہ ختم نہیں ہوگا۔راشد نسیم نے کہا کہ خوشحال پاکستان کے لیے ضروری ہے کہ اپنے خاندان سے تبدیلی کا آغاز کریں اور اسے پورے ملک میں پھیلا دیں، ہم اپنے خاندان میں تبدیلی کے ذریعے ہی ملک میں تبدیلی کا آغاز کر سکتے ہیں۔ کارکنان عوامی مسائل کے حل کے لیے جدوجہد تیز کردیں، لوگوں کے مسائل سے نجات دلانے کے لیے کوشش کریں۔ ڈاکٹر معراج الہدی صدیقی نے کہا کہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف سے علی گڑھ یونیورسٹی کو خط لکھا ،علی گڑھ یونیورسٹی کی بورڈ آف اسٹیڈیز کے اجلاس کے بعد سید ابو الاعلی مودودی ؒ کی لکھی گئی کتابوں پر پاپندی لگادی گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ فکرمودودیؒ خوشبو ہے آج بھی سید ابو اعلی مودودیؒ کی تحریریں نریندر مودی کے سپنوں کے اندر خواب بن کر آتی ہیں۔جماعت اسلامی کے کارکنان لائق مبارکباد ہیں کہ آپ جماعت اسلامی سے وابستہ ہیں، جو مسلمانوں کو کمزور کرنا چاہتے ہیں وہ سید کی کتاب ان کے ہاتھوں سے چھننا چاہتے ہیں، فکر مودود ی سے دور کرنا چاہتے ہیں۔امیر جماعت اسلامی محمد حسین محنتی نے کہا کہ پاکستان بیش بہا قربانیوں سے حاصل ہو ا، پاکستان اسلام کی بنیاد پر بنا تھا لیکن آج پاکستان کی کشتی کس طرح نے منجدھار میں پھنسی ہوئی ہے۔معیشت ڈوب گئی ہے، جماعت اسلامی کی یہی جدوجہد ہے کے ہم باطل نظام کے سامنے ڈٹ کر کھڑے ہو جائیں، حق کے نظام کے نافذ کرنے کے لیے ہر طرح کی قربانیاں دیں۔اسی لیے ہم انتخانی عمل میں بھی حصہ لیتے ہیں۔انتخابات کے ذریعے سے جو موقعے ملتے ہیں دعوت کو پہینچانے کے لیے اپنی بات کو پہنچانے کے لیے اور دین کے علم کو بلند کرنے کے لیے ہمیں جدوجہد کرنے چاہیے۔ہم بلدیاتی انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں، کارکنان بلدیاتی انتخابات کی بھر پور تیاری کریں۔