مزید خبریں

Jamaat e islami

کراچی میں بارش کا دھواں دار اسپیل ،مختلف علاقوں میں بجلی معطل

کراچی (اسٹاف رپورٹر) کراچی میں بارش کا دھواں دار اسپیل، شہر پانی پانی ہوگیا، نکاسی آب کے مسائل کھڑے ہوگئے، سڑکیں دریاؤں کا منظر پیش کرنے لگیں، متعدد علاقوں میں بارش کے پانی کے ساتھ سیوریج کے نالے بھی ابل پڑے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق 12 اور 13 اگست کو تیز اور موسلا دھار بارش کا امکان ہے، 17 سے 18 اگست کے دوران ایک اور سسٹم آسکتا ہے۔ علاقوں کی بجلی معطل ہوگئی،کے الیکٹرک کے 300فیڈر ٹرپ کرگئے، کے الیکٹرک نے عاشورہ والی رات بھی شہر میں 2 سے 4 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ جاری رکھی، جبکہ مستثنیٰ علاقوں میں بھی لوڈ شیڈنگ معمول بن گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق کراچی اور گرد و نواح میں مون سون بارشوں کے چوتھے اسپیل کی آمد کہ بعد بارشوں کا نیا سلسلہ شروع ہوگیا ہے، بدھ کی دوپہر بارش کا سلسلہ شروع ہوا جس کے باعث گزشتہ 4 روز سے جاری شدید گرمی کا زور ٹوٹ گیا ہے کراچی کے بیشترعلاقوں میں مون سون سسٹم کے باعث موسلادھار بارش کا سلسلہ جاری رہا ہے، میمن گوٹھ، لانڈھی ، ملیر، شاہ فیصل ، ماڈل کالونی، شارع فیصل،ائرپورٹ ،سپرہائی وے، کلفٹن ،صفورہ چورنگی ، گلزارہجری سمیت سائٹ ایریا، نارتھ کراچی، نارتھ ناظم آباد اور صدر میں تیز بارش نے ہرطرف جھل تھل کردیا ہے۔تیز بارش کے ساتھ ہی حسب روایت انتظامی نااہلی نظر آئی، مون سو بارشوں کے باعث کراچی میں رین ایمرجنسی نافذ ہے تاہم بلدیاتی عملہ غیر حاضر ہے، یونیورسٹی روڑ پر بارش کا پانی جمع ہونے سے ٹریفک کی روانی متاثر رہی۔ کارساز،نرسری اور اسٹیڈیم روڈ کے قریب بھی پانی جمع ہونے سے مسافروں کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا، صدر، ایمپریس مارکیٹ ، زیب النسا اسٹریٹ ، ایم اے جناح روڈ پر بارش کے باعث سیوریج نالے ایک بارپھراوورفلوہوگئے اور سڑکوں پر سیوریج کے پانی نے جمع ہوگیا ہے۔دوسری جانب بعض علاقوں میں بجلی کی فراہمی بھی معطل ہوگئی ہے۔کراچی میں بارش کے باعث کے ا لیکٹرک کے300 فیڈرز ٹرپ کرگئے ہیں۔ ضلع وسطی، شرقی، ملیر اور غربی کے متعدد علاقوں میں بجلی غائب ہوگئی۔ترجمان کے الیکٹرک کا کہنا ہے کہ کے ای کا سسٹم مستحکم ہے اورفیڈرزحفاظت کے پیشِ نظر بند ہیں، کچھ علاقوں میں پانی، کنڈوں کے پیش نظر حفاظتی اقدام لینا ناگزیر ہے۔کراچی میں بدھ کو صبح 11 بجے سے دوپہر 3 بجے تک سب سے زیادہ بارش قائد آباد میں32ملی میٹرریکارڈ کی گئی۔علاوہ ازیں کے الیکٹرک نے وفاقی حکومت کے احکامات بھی ہوا میں اڑا دیے، شہر بھر میں عاشورہ والی رات بھی دو سے چارگھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی گئی، مستثنیٰ علاقوں میں بھی ایک سے 2 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ معمول بن گیا ہے۔عاشورہ کی رات جن علاقوں میں بجلی غائب رہی ان میں نارتھ کراچی، شادمان ٹاؤن، لیاقت آباد، گلبہار، پہاڑ گنج، ایف بی ایریا، کریم آباد، گلشن ، گلستان جوہر، پی ای سی ایچ ایس ، پرانی سبزی منڈی، دھوراجی ،ریلوے سٹی کالونی، محمود آباد، اختر کالونی، ، رضویہ ، انچولی، لانڈھی، کورنگی ، اورنگی ، گلشن ظہور، بلدیہ ، کیماڑی، مشرف کالونی، میٹروول سائٹ، گلشن حدید،گلشن معمار، احسن آباد، و دیگر علاقے شامل ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ کے الیکٹرک 500 میگا واٹ بجلی کی کمی لوڈ شیڈنگ سے پوری کر رہی ہے۔بارش شروع ہوتے ہی شہرکے مختلف