مزید خبریں

Jamaat e islami

لاپتہ افراد کو عدالتوں میں پیش کرنے کانعرہ لگائوں گا‘نواب اسلم رئیسانی

کوئٹہ(آن لائن)چیف آف ساراوان اورسابق وزیر اعلیٰ بلوچستان نواب محمد اسلم خان رئیسانی نے کہاہے کہ لاپتاافراد کی بازیابی کے نعرے کے بجائے لاپتا افراد کوعدالتوں میں پیش کرنے کانعرہ لگائوں گا ، جہاں امن ہو وہاں ترقی ہوتی ہے بغیر امن کے ترقی ممکن نہیں ،سی پیک منصوبوں کے معاہدوں کو بلوچستان اسمبلی کی پراپرٹی بنانے کی قراداد پر آج تک عمل نہیں ہوسکا، پشتونوں اوربلوچوں کو پتا ہوناچاہیے کہ ان کے علاقے سے گزرنے والے روٹ میں کیا ہے، ایسا منصوبہ قبول نہیں جس میں ہمارے لوگوں کے حقوق محفوظ نہیں ہوں،طاقت کے ذریعے حالات ٹھیک ہوسکتے تھے توپھر سلطنت عثمانیہ ،رومنز ،امریکن اور سویت یونین کی سب سے زیادہ فوجیں ہیں وہ آج تک سوائے تباہی کے اور کیا کرسکے ہیں ،مرکز میں سیاسی ہلچل اسلام آباد،پنڈی اور لاہور کا جھگڑا ہے اگر بلوچستان کا سروکار ہوتا توعمران خان بلوچستان کا دورہ کرتے انہیں پتا ہے بلوچستان کے حالات ٹھیک نہیں ہیں، پاکستان کے استحکام کا واحد راستہ بلوچوں ،پشتونوں ،سندھیوں ،سرائیکیوںاورپنجابیوں کے حقوق کوتسلیم کرنے میں ہے ،فیڈریشن آف پاکستان میں اپنے حقوق کے لیے سوچنے اور مذمت کے بجائے عملاََ جدوجہد کرنے کی ضرورت ہے، دہشت گرد، غدار اورپیٹریاٹ جیسے الفاظ کی تشریح کرناہوگی ۔ان خیالات کااظہار انہوں نے شہید باز محمد کاکڑ فائونڈیشن اور اسلام آباد ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام سانحہ 8اگست 2016ء کی یاد میں تعزیتی ریفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ نواب محمد اسلم رئیسانی نے کہاکہ تیسرے درجے کے شہری اور بے عزتی کے لیے پاکستان کاحصہ نہیں بنے تھے ۔