مزید خبریں

Jamaat e islami

امام حسین نے نااہل شخص کی حکومت قبول نہیں کی‘ حافظ ادریس

لاہور( نمائندہ جسارت)جماعت اسلامی کے مرکزی رہنما حافظ محمد ادریس نے جامع مسجد منصورہ میں خطاب جمعہ کے دوران کہا ہے کہ ماہ محرم کے آغاز میں خلیفہ دوم حضرت عمرؓ کی شہادت ہوئی۔ یزیدی دور میں ماہ محرم ہی میں نواسۂ رسول حضرت حسینؓ نے ملوکیت اور موروثی بادشاہت کے خلاف صدائے حق بلند کی اور خون دے کر ثابت کیا کہ زور زبردستی سے نااہل لوگوں کو امت پر مسلط ہونے کا کوئی جواز نہیں۔ اہل کوفہ و عراق نے ہزاروں خطوط لکھ کر حضرت حسینؓ سے
درخواست کی کہ وہ عراق آئیں تو سارے علاقے کے مسلمان ان کی بیعت کریں گے۔ ابن زیاد کے ظلم کے سامنے کوفی کھڑے نہ رہ سکے اور نواسۂ رسولؐ سے بدعہدی اور غداری کے مجرم قرار پائے۔ آپؓ کو یزیدی فوجوں نے راستے میں روک کر کہا کہ آپ یزید کی بیعت کریں ورنہ آپ کو نہ آگے بڑھنے دیا جائیگا نہ پیچھے مڑنے کی اجازت ہو گی۔ آپؓ نے فرمایا کہ میں جان قربان کر سکتا ہوں، مگر ایک نااہل شخص کی حکومت کے سامنے سر کسی صورت نہیں جھکا سکتا۔ حافظ محمد ادریس نے کہا کہ کربلا کے میدان میں اہل حق ایک ایک کر کے جام شہادت نوش کر گئے، مگر کوئی کمزوری نہ دکھائی۔ اس واقعہ سے یہ درس ملتا ہے کہ ظلم اور فسق کے نظام کو قبول کرنے کی اسلامی معاشرے میں گنجائش نہیں ہے۔ امام حسین اور ان کے تمام ساتھیوں اور خواتین و بچوں نے بھی تمام مشکلات کے باوجود کوئی نماز قضا نہیںکی۔