مزید خبریں

Jamaat e islami

پی ٹی آئی کا حکومت کو اسمبلیاں تحلیل کرنے کیلیے ایک ماہ کا الٹی میٹم، عمران خان کا تمام 9 حلقوں سے خود ضمنی الیکشن لڑنے کا بھی فیصلہ

اسلام آباد( نمائندہ جسارت/خبر ایجنسیاں)پی ٹی آئی نے حکومت کو اسمبلیاں تحلیل کرنے کے لیے ایک ماہ کا الٹی میٹم دیتے ہوئے اسلام آباد میں جلد عوامی طاقت کے مظاہرے کا اعلان کردیا‘اسلام آباد کے جلسے میں ہم انتخابات کی تاریخ کے اعلان کا الٹی میٹم دیں گے اور ہم ایک ماہ سے زیادہ اس حکومت کو وقت نہیں دے سکتے ۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھاکہ ہم الیکشن کمیشن کے کسی فیصلے اورانتخابات کے عمل پر بھروسا نہیں رکھتے۔اگلے 48 گھنٹوں میں ہم اسلام آباد میں بڑے اجتماع کی تاریخ دیں گے، اس جلسے میں ہم انتخابات کی تاریخ کے اعلان کا الٹی میٹم بھی دیں گے اور ہم ایک ماہ سے زیادہ اس حکومت کو وقت نہیں دے سکتے۔انہوں نے کہا کہ حکومت انتخابات کا اعلان نہیں کرتی تو ہمارے اگلے اقدام کے لیے تیار ہوجائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ الیکشن کمیشن کے چیف اورممبران مستعفی ہوں ان پرکسی قسم کا بھروسا نہیں ہے، ضمنی انتخاب کے شیڈول پر الیکشن کمیشن کو 16 اگست تک انتظار کرنا چاہیے تھا، یہ جس طرح الیکشن کرانا چاہ رہے ہیں اس طرح ممکن نہیں، خالی میدان والی حسرت یہ لے کر نہیں جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ افغانستان میں ڈرون حملے میں ایمن الظواہری ہلاکت پر وضاحت چاہتے ہیں، حکومت بتائیے کہ ہماری فضائی حدود یا زمین استعمال ہوئی یا نہیں؟انہوں نے کہا کہ پاکستان نے ماضی میں بہت بھاری قیمت ادا کی اب ہم کسی ایسے سودے کا حصہ نہیں بن سکتے، قوم جواب چاہتی ہے کہیں اب ہم پھر سے القاعدہ کے خلاف یا امریکا کا آلہ بننے نہ جا رہے ہوں۔دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ 9 حلقوں سے خود ضمنی الیکشن لڑ ونگا ، آئندہ بھی جن سیٹوں پر انتخابات کرائے گئے پچھلی نشستیں چھوڑ کر انتخابات میں حصہ لوں گا، عام انتخابات 2022میں ہی ہوں گے، حکومت اس سال انتخابات پر تیار تھی،فوج کے اندر سب سے بہتر افسر کو آرمی چیف لگانا چاہیے۔ صحافیوں و اینکرپرسنزسے گفتگو کرتے ہوئے عمراان خان کا کہنا تھا کہ مجھے نااہل نہیں کیاجا سکتا، الیکشن کمیشن کو فیصلہ کہیں اور سے دیا گیا، فنڈنگ ریزنگ کی حوصلہ شکنی ہوگی تو لوگ مافیا سے فنڈ لیں گے۔انہوں نے کہا کہ کتنا بڑا ظلم ہے کہ آرمی چیف کی تقرری پر ملک رکا ہوا ہے‘ نوازشریف واپس نہیں آئے گا۔ ایک سوال پر عمران خان نے کہا ہے کہ میرے دور اقتدار میں 2 بڑی غلطیاں ہوئیں پہلی ابھی نہیں بتاؤں گا دوسری غلطی یہ تھی کہ سکندر سلطان کو چیف الیکشن کمشنر بنایا۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ ماضی میں 2 غیرملکی حکومتوں نے فنڈنگ کی پیشکش کی جو ٹھکرادی۔انہوں نے کہا کہ یہ لوگ مجھے سنگل آؤٹ کرنا چاہتے ہیں اور سمجھتے ہیں مجھے نااہل کرالیں گے لیکن ان کے خواب کبھی پورے نہیں ہوں گے میں موجودہ حکمرانوں کا ہر میدان میں مقابلہ کروں گا۔