مزید خبریں

Jamaat e islami

لیاری : جھوٹے مقدمات کیخلاف خواتین سڑکوں پرنکل آئیں

کراچی(اسٹاف رپورٹر) لیاری میں پولیس کی سرپرستی میں منشیات فروشی، بھتا خوری اور جھوٹے مقدمات کے خلاف لیاری کی خواتین نکل آئیں، تھانہ چاکیواڑہ کلاکوٹ کے باہر جماعت اسلامی ویمن ونگ لیاری کااحتجاجی مظاہرہ ،اس موقع پر خواتین نے بینرز اور پلےکارڈ اٹھا رکھے تھے اور منشیات فروشی اور مجرموں کے خلاف پولیس کی مجرمانہ خاموشی پر شدید نعرے بازی کی۔ پولیس کی سرپرستی میں منشیات فروشی بھتا خوری ،گٹر وار کی سرپرستی ،سیاسی ایما پر معصوم نوجوانوں کی گرفتاری اور ایم پی اے سید عبدالرشید سمیت جماعت اسلامی کے بلدیاتی امیدواروں کے خلاف جھوٹے مقدمات درج کرنے کے خلاف احتجاج میں لیاری کے علاقوں رانگیواڑہ، گل محمد لین، چاکیواڑہ ، بہارکالونی، گلستان کالونی، شاہ بیگ لین، آگرہ تاج، موسیٰ لین سمیت تمام یوسیز سے خواتین شریک ہوئیں۔جماعت اسلامی کی سابق ڈسٹرکٹ کونسلر اور نائب ناظمہ ضلع جنوبی نازیہ عبدالودود اور جمیلہ بلوچ نے خطاب کرتے ہوئے مطالبہ کیاکہ پولیس کی سرپرستی میں منشیات کاکاروبار بند کیاجائے۔انہوں نے کہاکہ لیاری میں تعینات کرپٹ جیالے ایس ایچ او چاکیواڑہ ایوب سومرو کو برطرف کرو ۔ ان کاکہنا تھا کہ لیاری بدترین سیوریج مسایل کاشکار ہے اور پولیس گٹر وار میں ملوث پیپلز پارٹی کے جیالوں کی سرپرستی کررہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی کے بے گناہ نوجوانوں کی گرفتاری کرنے والی پولیس منشیات فروشوں کے خلاف کارروائی کیوں نہیں کرتی۔علاقہ ایس ایچ اوز پورا تھانہ بیچ دیتے ہیں پولیس منشیات فروشوں کے لیے کام کرتی ہے۔ان کامطالبہ تھا کہ ایم پی اے سید عبدالرشید نے عوامی مسایل پر احتجاج کیا ان کے خلاف درج جھوٹے مقدمات واپس لیے جائیں۔انہوں نے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا کہ بلدیاتی امیدواروں کے خلاف جھوٹے مقدمات پری پول رگنگ کے زمرے میں آتاہے اسکا نوٹس لیاجائے۔خواتین رہنماؤں نے کہاکہ جماعت اسلامی کے احتجاجی کیمپ پر حملہ اور کارکنوں پر تشددکرنے والوں کے خلاف مقدمات درج کیے جائیں اور لیاری سے گٹر وار منشیات فروشی اور پولیس گردی بند کی جائے۔