مزید خبریں

Jamaat e islami

اسرائیلی بلڈوزر وں نے فلسطینیوں کو سامان نکالنے کی مہلت بھی نہ دی

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) اسرائیلی بلدیہ کے بلڈوزر وں نے فلسطینیوں کے مکانات مسمار کردیے اور انہیں سامان نکالنے کی مہلت بھی نہ دی ۔ خبررساں اداروں کے مطابق اسرائیلی بلدیہ کی جانب سے غیر علانیہ انہدامی مہم کئی برسوں سے جاری ہے۔ حال ہی میں مقبوضہ بیت المقدس میں بھی ایک اور فلسطینی گھرانے کو بے گھر کیا گیا ہے۔ صہیونی بلدیہ نے مقبوضہ بیت المقدس کے علاقے سلوان میں فلسطینی کے مکان کو اچانک غیر قانونی قرار دے کر بھاری مشینوں سے مسمار کردیا۔ بے گھر ہونے والوں میں بچے اور خواتین شامل ہیں، جن کے پاس کوئی متبادل ٹھکانہ نہیں ہے، جب کہ گھر کے اندر موجود سامان بھی بلڈوز رمہم کی نذر ہو گیا ۔ مسمار کر دیے گئے گھر کی تعمیر 15سال قبل کی گئی تھیتاہم اچانک اسرائیلی قابض اتھارٹی نے اسے غیر قانونی قرار دے دیا۔ اس دوران گھر کی مسماری پر احتجاج کرنے والوں کو فوج نے تشدد کا نشانہ بنایا اور 2کو گرفتار بھی کر لیا گیا۔ ادھر مغربی کنارے کے مختلف علاقوں میں انہدامی مہم کے دوران کئی مکانات مسمار کردیے گئے۔ فلسطینی ذرائع ابلاغ کے مطابق اسرائیلی فوج بلڈوزر کو ایک ہتھیار کے طور پر فلسطینیوں کے خلاف استعمال کرتی ہے اور اس دوران درختوں کو بھی اکھاڑ دیا جاتا ہے۔ حال ہی میں بیت المقدس میں زیتون کے درختوں تک کو اکھاڑ دیا،جب کہ نیز ایک کنویں کو بند کردیا۔ الخلیل کے علاقے میں قابض فوج نے مقامی فلسطینیوں کو گھر خالی کر جانے اور گھروں کو گرانے کے نوٹس دیے۔