مزید خبریں

Jamaat e islami

معاشی طور پر ہم آئی ایم ایف کے غلام ہیں، وزیر اعظم

 

پشاور( خبرایجنسیاں) وزیر اعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ یہ کیسی آزادی ہے کہ معاشی طور پر ہم آئی ایم ایف کے غلام ہیں اور کہتے ہیں یہ خداداد ملک پاکستان ہے۔خیبر پختونخوا کے ضلع ڈی آئی خان کے علاقے بن کورائی میں سیلاب زدگان کی بحالی کے لیے لگائے گئے کیمپوں کے دورے کے موقع پر متاثرین سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا اگر گزشتہ 75 برس کے دوران وہ ممالک جنہیں ہم حقارت کی نظر سے دیکھتے تھے وہ ممالک اتحاد، محنت، دیانت اور اسلامی تعلیمات میں ملنے والے رہنما اصولوں کے ساتھ کام کرکے ہم سے آگے نکل گئے جبکہ ہم بہت پیچھے رہ گئے۔انہوں نے کہا کہ بڑی قربانیوں کے بعد حاصل کیے گئے اس ملک کو گزشتہ 72 برس میں ہم نے کیا دیا، یہ ہے وہ لمحہ فکر، یہ ہے وہ سوال جس کے جواب کے لیے ہم سب کو اپنے گریبانوں میں جھانکنا چاہیے کہ اتنے قدرتی وسائل اور معدنی دولت کے باوجود ہم پیچھے کیوں ہیں؟۔ سیلاب متاثرین سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ اگر ملک میں آنے والی اب تک آنے والی تمام حکومتیں چاہے وہ سویلین حکومتیں ہوں یا فوجی، اگر وہ درد دل سے کام لیتیں تو پاکستان آج ان معاشی مسائل کا شکار نہیں ہوتا۔شہبازشریف نے کہا کہ یہ کیا ہمیں اپنے مالک کی جانب سے دیے گئے احکامات کی نفی نہیں ہے جس نے ہمیں کہا ہے کہ نماز ادا کرو اور رزق کی تلاش میں دوڑ جاؤ۔ان کا کہنا تھا کہ دکھی انسانیت کی خدمت اور دن رات محنت کرنا دین اسلام اور قرآن کریم کی تعلیم کی روح ہے، اگر اج بھی ہم ان تعلیمات پر عمل کرلیں تو پاکستان کے عظیم ملک بننے کی راہ میں کوئی رکاوٹ حائل نہیں ہو سکتی۔انہوں نے کہا کہ ہم متحد ہوں تو کوئی مشکل، کوئی پہاڑ ہمارے راستے میں رکاوٹ نہیں بنے گا، اتحادی حکومت مل کر ملک کو تمام بحرانوں سے نکالے گی، اللہ کا حکم ہے کہ دکھی انسانیت کی خدمت کریں، آخری آفت زدہ گھرانے کی بحالی تک چین سے نہیں بیٹھوں گا۔وزیراعظم نے کہا کہ طوفانی بارشوں سے آنے والے سیلاب سے متاثرہ افراد کی جلد از جلد بحالی کو یقینی بنانے کے لیے وفاقی اور صوبائی حکومتوں اور محکموں کی مشترکہ کوششیں ناگزیر ہیں۔ علاوہ ازیں ٹانک میں گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ کے پی حکومت سیلاب متاثرین کے لیے امدادی رقم میں اضافہ کرے اور یہ رقم 8 سے 10 لاکھ روپے کرے تو بہتر ہے۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان حکومت بھی سیلاب سے جاں بحق افراد کے لواحقین کو 10 لاکھ روپے دے رہی ہے، سیلاب سے مکمل تباہ گھر کے مالک کو 5 لاکھ اور جزوی متاثرگھرکو 2 لاکھ روپے دے رہے ہیں۔وزیراعظم کا کہناتھا کہ متاثرہ علاقوں کا دورہ مکمل کرکے ایک دو روز میں صوبائی حکومتوں کے ساتھ میٹنگ کریں گے۔اس موقع پر وزیراعظم نے ٹانک روڈ وفاقی حکومت کی جانب سے بناکر دینے کا اعلان کیا۔بعد ازاں وزیراعظم نے یک بیان میں کہا کہ ممنوعہ فارن فنڈنگ کیس نے عمران خان کو بے نقاب کردیا، اتحادی حکومت فارن فنڈنگ کیس کو منطقی انجام تک پہنچائے گی۔ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کئی دہائیوں سے ایمانداری، احتساب اور شفافیت کے نام پر لوگوں کو دھوکا دے رہے ہیں، عمران نیازی 8 سال حیلوں بہانوں سے فیصلے کو تاخیرکا شکار کرتے رہے۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی نے فیصلے کو رکوانے کے لیے اسلام آباد ہائی کورٹ میں 9 پٹیشنز دائر کیں، فیصلے کو 50 بار التوا میں ڈالنے کے لیے جھوٹے بیان حلفی جمع کرائے گئے۔ان مزید کہنا تھاکہ بغیر کسی شک کے ثابت ہوگیا کہ پی ٹی آئی ’فارن ایڈڈ پارٹی‘ ہے۔