مزید خبریں

Jamaat e islami

اسرائیلی فوج نے غزہ کی ناکا بندی مزید سخت کردی

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) اسرائیلی فوج نے غزہ کی ناکابندی مزید سخت کرتے ہوئے سرحدی علاقوں کو آمدورفت کے لیے بند کردیا۔ خبررساں اداروں کے مطابق اسلامی جہاد نامی تنظیم کے 2 ارکان کی گرفتاری کے بعد جوابی کارروائیوں کے خطرے کے پیش نظر علاقے کو بند کیا گیا ہے۔ اس سے قبل مغربی کنارے کے ضلع جنین میں ایک چھاپا مار کارروائی کے دوران اسرائیلی فوج نے 17 سالہ فلسطینی نوجوان کو گولی مار کر شہید کر دیا تھا۔اسلام جہاد نے شہید نوجوان کی شناخت ضرار صالح کفرینی کے نام سے کرتے ہوئے اسے تنظیم کا کارکن قرار دیا تھا۔ اس کے بعد اسرائیلی فوج اور پولیس کے مشترکہ آپریشن میں 2 فلسطینیوں کو گرفتار کیاگیا۔ زیر حراست افراد میں سے ایک باسم سعدی بھی ہیں جو مغربی کنارے میں اسلامی جہاد کے شعبہ سیاست کے سینئر رہنما ہیں۔ اسرائیلی فوج کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا کہ اسلامی جہاد کی جوابی کارروائی کے خطرے کے پیش نظر غزہ کے قریب کے علاقوں میں شہریوں کو جانے سے روکا گیا ہے۔ دوسری جانب غرب اردن کے علاقے کفر قدوم میں اسرائیلی فوج نے چھاپا مار کارروائی کے دوران فائرنگ کردی،جس کے نتیجے میں 3فلسطینی زخمی ہوگئے۔ خبررساں اداروں کے مطابق اسرائیلی فوجیوں نے کفر قدوم کے گاؤں پر چھاپا مارا جس پر مشتعل نوجوانوں نے مزاحمت کی ۔ فلسطینیوں نے قابض فوج پرپتھراؤکیا جب کہ جوابی کارروائی میں اسرائیلی فوجیوں نے اندھادھند فائرنگ کردی۔