مزید خبریں

خواتین اساتذہ پر وحشیانہ تشددقابل مذمت ہے‘ جماعت اسلامی

کراچی(اسٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی سندھ کے جنرل سیکرٹری کاشف سعید شیخ نے کراچی میں خواتین ٹیچرز پر بدترین تشدد اور گرفتاریوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ زرداری مافیا اور مراد علی شاہ مافیا کی جانب سے خواتین اساتذہ پر وحشیانہ تشدد کی مذمت کرتے ہیں کاش بینظیر زندہ ہوتیں تو اس تماشا کرنے والے سی ایم سے نمٹ لیتیں، بلاول سے امید رکھنا فضول ہے،خواتین اساتذہ کو اٹھا اٹھا کر، مکوں اور لاتوں سے مار کر پولیس گاڑی میں پھینکا گیا، یہ خواتین کسی چوری یا کسی اور جرم میں ملوث نہیں بلکہ ٹیچرز ہیں اور کراچی پریس کلب کے باہر مطالبہ کر رہی ہیں کہ ہمیں مستقل کیا جائے ۔یہ ہے پیپلزپارٹی کا فاشسٹ چہرہ لیکن پھر بھی خود کو ملک کی سب سے بڑی جمہوری پارٹی قرار دیتے ہیں۔ انہوں نے ایک بیان میں مزید کہا کہ سندھ حکومت ملازمین کے مسائل حل کرنے میں سنجیدہ نہیں ہے، اساتذہ ہوں یا گنے کے آبادگار، ڈاکٹرز ہوں یا عام شہری ہمیشہ ان کوتشدد کا نشانہ بنایا گیا ہے، سندھ کے اساتذہ کے جائز مطالبات تسلیم کرکے ان کو اپنے حقوق دیے جائیں، اساتذہ پر تشدد کرنے والے پولیس افسران سے استعفا لیا جائے،، گرفتار اساتذہ کو فوری رہا کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ پولیس اہلکار شرم کریں یہی اساتذہ انہیں پڑھاکر انسان بناتے ہیں، سندھ میں حکومت مخالف ہر مسئلے کا حل پولیس گردی سمجھا جاتا ہے، جماعت اسلامی سندھ اساتذہ کے تمام جائز مطالبات کی حمایت کرتی ہے اور ہم اساتذہ کے جائز مطالبات کی منظوری تک ان کے ساتھ احتجاج میں بھرپور ساتھ دیں گے۔