مزید خبریں

سندھ میں میوزک ٹیچرز کے تقرر کی مذمت کرتے ہیں، عظیم صدیقی

کراچی(اسٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی سندھ شعبہ تعلیم کے ڈائریکٹر محمد عظیم صدیقی نے اساتذہ کی کمی کے باعث 11 ہزار اسکولوں کی بندش کو شرمناک عمل قراردیا ہے۔ شعبہ تعلیم جماعت اسلامی صوبہ سندھ کے خصوصی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 14 نومبر 2021ء کو وزیر تعلیم نے اس بات سے آگاہ کیا تھا کہ ہم 50 ہزار اساتذہ کی بھرتی کررہے ہیں جس سے اسکولوں میں اساتذہ کی کمی پوری ہوجائے گی اور اب ارشاد فرمارہے ہیں کہ 11 ہزار اسکول اساتذہ کی کمی کے باعث بند تھے ، اب اگست سے بحال کردیے جائیں گے۔ کیا وزیر تعلیم اس بات سے آگاہ کریں گے کہ یہ کب قائم کیے گئے تھے اوریہ کتنے عرصے سے بند تھے ؟ اساتذہ کے تقرر کی کیا منصوبہ بندی کی گئی ہے؟کیا سائنس اور ریاضی کے اساتذہ کی کمی پوری ہوگئی جو میوزک کے اساتذہ کی بھرتیاں کی جارہی ہیں جو  کہ ویسے بھی غیر آئینی اور غیر شرعی اقدام ہیں ۔ تعلیمی اداروں میں میوزک کلاسز کے فروغ کی مذمت کی جاتی ہے۔ وزیر تعلیم سائنس اور ٹیکنالوجی کی تعلیم پر زیادہ توجہ دیں۔  انہوں نے کہا کہ ہم نصابی سرگرمیاں ضرور ہونی چاہیے جو بچوں میں اعتماد، قائدانہ صلاحیت اور جسمانی صحت و تندرستی کا باعث بنیں لیکن ناچ گانے اور اس طرح کی دیگر ہر اس عمل کی ہم  مذمت کریں گے جو غیر شرعی ہو۔اجلاس میں شعبہ تعلیم کے ڈپٹی ڈائریکٹرز انتصارغوری، اے ڈی سومرو، سعید احمد صدیقی، محمد غوث ، اقبال یوسف، ڈاکٹر خالد محمود، طاہر جمالی ،ڈاکٹر نسیم احمد اور دیگر ارکان بھی شریک تھے۔