مزید خبریں

سکھر، بارش تھمے12 گھنٹے گزر گئے، کئی علاقے بجلی سے محروم

سکھر (نمائندہ جسارت) سکھر اور گردونواح میں گزشتہ شب ہونے والی طوفانی بارش سے میونسپل اور سیپکوانتظامیہ کی نا اہلی سامنے آگئی، بارش کے آغاز سے ہی متعدد علاقوں میں بجلی کی فراہمی بند ہو گئی جو کئی گھنٹوں تک بحال نہیں کی جا سکی، بارش تھمے 12 گھنٹے گزر گئے، مگر بارش کا پانی کئی علاقوں سے نہیں نکالا جا سکا ہے، شہر کے متعدد نشیبی علاقے پرانا سکھر، نیو پنڈ ،ٹانگہ اسٹینڈ پانی میں ڈوبے رہے،تیز بارش سے نشیبی زیر آب آگئے سکھر ریلوے اسٹیشن، ورکشاپ روڈ و دیگر علاقوں میں گندہ پانی جمع ہونے نمازیوں کو شدید مشکلات کا سامنا اور میونسپل عملہ غائب۔موسمیات ذرائع کے مطابق گزشتہ رات سکھر میں 82 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ، انتظامیہ کے سبب باران رحمت شہریوں کے لیے باعث زحمت بن گئی، انتظامیہ اور افسران بلدیاتی انتخابات میں سیاستدانوں کی خدمت میں مصروف ہیں ،طوفانی بارشوں نے سکھر اور گردونواح میں تباہی مچادی، درخت اور سائن بورڈز گرنے کے واقعات، درخت تلے دب کر رکشا ڈرائیور جان سے گیا، بھائی شدید زخمی ہو گئے، تیز بارش سے نشیبی زیر آب آگئے سکھر ریلوے اسٹیشن،ورکشاپ روڈ و دیگر علاقوں میں گندہ پانی جمع ہونے نمازیوں کو شدید مشکلات کا سامنا اور میونسپل عملہ غائب ،تیز بارش ترقیاتی کام “برائے نام” بہہ گیا۔پتھر، ریت، سیمنٹ وغیرہ ڈرینیج لائنوں میں بہہ گیا۔لاکھوں کا نقصان اور ڈرینیج لائنیں چوک ہونے کا خدشہ ہے، روڈ راستوں پر تالاب کے مناظر پیش کر رہے ہیں ،خانپورمہر کے قریب طوفان بارش کے باعث ہائی وولٹیج ٹرانسمیشن لائن گرنے سے دو گرڈ اسٹیشنوں کو بجلی کی فراہمی بند ہو گئی، تجارتی علاقہ مہران مرکز کی دکانوں میں پانی داخل ہوگیا،تاجر بے بسی سے اپنی تباہی کا تماشا دیکھتے رہے۔