مزید خبریں

میرپورخاص، ٹرانسپورٹرز نے کرائے کی مد میں 100فیصد اضافہ کردیا

میرپورخاص(نمائندہ جسارت) پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے بعد پبلک ٹرانسپورٹ کے مالکان نے کرایوں میں 80 سے 100 فیصد تک اضافہ کر دیا ہے، ٹرانسپورٹرز نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے بعد زیادہ تر گاڑیاں کھڑی کر دی ہیں اور ان پر چلنے والا عملہ بیروزگار ہے، میرپورخاص حیدرآباد ٹول پلازہ نے بھی ٹول میں فی گاڑی 50 روپے اضافہ کر دیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق وفاق کی جانب سے پیٹرولیم نرخ میں اضافے کے بعد میرپورخاص سے دیگر شہروں کو جانے والی پبلک ٹرانسپورٹ کے کرایوں میں 80 سے 100 فیصد تک کرایوں میں اضافہ کر دیا ہے میرپورخاص سے کراچی جانے والی اے سی کوچ کے مالکان نے کرایوں میں ایک سو فیصد تک اضافہ کر دیا ہے جبکہ نان اے سی گاڑیوں نے 80 فیصد تک اضافہ کر دیا ہے جبکہ میرپورخاص سے دیگر شہروں کو جانے والی پبلک ٹرانسپورٹ کے کرایوں میں 80 فیصد تک اضافہ کر دیا ہے۔ اس حوالے سے اے سی کوچ اور کوسٹر مالکان کا کہنا ہے کہ کہ وفاقی حکومت کی جانب سے ڈیزل کی قیمتوں میں ایک ماہ میں 119 روپے تک اضافے کے بعد کوسٹر کے کرایوں میں 30 فیصد اضافہ کیا ہے ڈیزل میں اضافے کے بعد ٹرانسپورٹرز کا کاروبار بہت متاثر ہوا ہے ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے کے بعد ٹرانسپورٹرز نے اپنی 70 فیصد گاڑیاں کھڑی کر دی ہیں اور ان گاڑیوں پر چلنے والا عملہ بیروزگار ہو گیا ہے جبکہ 30 فیصد گاڑیاں چل رہی ہیں ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے کے بعد گاڑیوں کا خرچا بھی پورا نہیں ہو رہا ہے دوسری جانب میرپورخاص حیدرآباد ٹول پلازہ کی انتظامیہ نے یکطرفہ ٹول 220 سے بڑھا کر 270 روپے کر دیا ہے ۔انہوں نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ پیٹرولیم قیمتوں میں اضافہ فوری واپس لیا جائے تاکہ ٹرانسپورٹرز اور پبلک ٹرانسپورٹ پر چلنے والے افراد کو بیروزگار ہونے سے بچایا جائے دیگر صورت میں گاڑیاں کھڑی کر کے احتجاج کیا جائے گا۔